تیرہ سالہ پاکستانی بچی جو دنیا کے ہر ملک کی کتاب پڑھنا چاہتی ہے

تیرہ سالہ پاکستانی بچی جو دنیا کے ہر ملک کی کتاب پڑھنا چاہتی ہے

لاہور:اکثر بچے ویڈیو گیمز بہت پسند کرتے ہیں،کچھ بستر میں ہی پڑے رہتے ہیں کچھ کے شوق پاپ کارن کھانا ہوتے ہیں،لیکن ہم یہاں آپکو ایک ایسی بچی کا تعارف کروانے جا رہے ہیں جس کا نام ایشا عارف عشبانی ہے اس کی عمر صرف تیر ہ سال ہے جب


ُٓ اس سے ملنے جائیں گئے تو ارد گرد صرف کتابیں ہی نظر آئیں گی،اس چھوٹی سی عمر میں ایشا کے خواب بہت بڑے ہیں،پچھلے سال ایشا نے ایک مشن شروع کیا وہ مشن تھا زمین پر موجود ہر ملک کی کتاب کو پڑھنا،ایشا کا کہنا کہ کتاب پڑھنا میرا مشغلہ ہے اور اس پورے سال میں نے ایک چیز پر غور کیا کہ لفظوں کی طاقت سب سے بڑی ہے اور دنیا کے بارے میں آپکا نظریہ صرف کتابیں ہی بدل سکتی ہیں۔

ایشا کراچی کی رہنے والی ہے،ایشا کراچی گرائمر سکول کی طالبہ ہے،یہ صرف 8th کلاس کی طالبہ ہے مگر جب آپ اس سے بات کریں گئے تو آپ کو لگے کا جیسے آپ کسی سکالر سے بات کر رہے ہیں۔ وہ ایک بہت سمجھدار لڑکی ہے اور ایشا کی انگلش بہت شاندار ہے اور ڈان میں فیچر بھی لکھتی ہے۔

جب ایشا سے پوچھا گیا کہ کہ اپنے پڑھنے والوں کو بتائے وہ کونسی چیز ہے جسکی وجہ سے ایشا کو پڑھائی سے اتنی محبت ہے جسکے جواب میں ایشا کا کہنا ہے وہ ہمیشہ سے ایک لکھاری بننا چاہتی تھی اور لکھاری کے لیے ضروری ہے کہ وہ کتابیں پڑھے اور کتاب بینی سے محبت کرنے والا زندگی میں ناکام نہیں ہوتا۔