امریکی صدر پر تقریب کے دوران موبائل فون’حملہ‘ ہوگیا

امریکی صدر پر تقریب کے دوران موبائل فون’حملہ‘ ہوگیا
Image by The Right Scoop

انڈیانا: ایک تقریب کے دوران امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ پر ’حملہ‘ کردیا گیا جبکہ سکیورٹی پر مامور اہلکاروں نے ’حملہ آور ‘ کو پکڑ کر تقریب سے باہر نکال دیا۔


غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق ہوا کچھ یوں کہ امریکہ کی ریاست انڈیانا کے شہر میں ہونے والے پولیس کے ’نیشنل رائفل ایسوسی ایشن‘ کے سالانہ کنونشن میں شرکت کے لیے جیسے ہی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سٹیج پر پہنچے تو وہاں موجود ایک شخص نے ان کی طرف موبائل فون پھینک دیا۔

امریکی سیکرٹ سروس کے اہلکاروں نے فوری طور پر موبائل فون پھینکنے والے کو حراست میں لے کر تقریب سے باہر نکال دیا۔موبائل فون پھینکنے والے نے دعویٰ کیا ہے کہ وہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا مخالف نہیں ہے بلکہ ان کا حامی ہے۔

سکیورٹی اہلکار موبائل فون پھینکنے والے شخص کے عزائم اور ارادے جاننے کی کوشش کررہے خیال رہے کہ امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ماہ رواں کے آغاز پر امریکی سیکرٹ سروس کے سربراہ کو ان کے منصب سے فارغ کرنے کے احکامات جاری کیے تھے۔

انہوں نے سیکرٹ سروس کی سربراہی کے لیے جیمز مرے (James Murray) کا نام تجویز کیا تھا۔موبائل فون پھینکنے کے حوالے سے اپنی نوعیت کا شاید یہ پہلا واقعہ ہے جو رپورٹ ہوا ہے وگرنہ اس سے قبل تو عالمی سیاسی رہنماؤں پر جوتے پھینکے جانے کے درجنوں واقعات رپورٹ ہو چکے ہیں۔