فخر زمان نے پاکستان کو ورلڈ کپ 2019 کے لیے فیورٹ قرار دیدیا

فخر زمان نے پاکستان کو ورلڈ کپ 2019 کے لیے فیورٹ قرار دیدیا

فائل فوٹو

لندن :قومی ٹیم کے جارحانہ اور چیمپئنز ٹرافی فائنل میں بھارت کو تگنی کا ناچ نچوانے والے نوجوان اوپننگ بلے باز فخر زمان نے پاکستان کو ورلڈ کپ 2019 کے لیے فیورٹ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستانی ٹیم آئندہ سال ہونے والے عالمی کپ کے لیے مکمل طور پر تیار اور بہترین کھلاڑیوں سے لیس ہے۔

ایک انٹرویو میں فخر زمان نے کہا کہ میں محسوس کرتا ہوں کہ پاکستان کو ورلڈ کپ کےلئے فیورٹ قرار دیا جانا درست ہے کیونکہ ہماری ٹیم اس ایونٹ کےلئے مکمل طور پر تیار اور بہترین کھلاڑیوں سے لیس ہے۔

25سالہ کرکٹر نے بتایا کہ چیمپیئنز ٹرافی میں قومی ٹیم کی حالیہ فتوحات اور تجربہ اسے آئندہ سال ہونے والے عالمی کپ کےلئے فیورٹ بناتا ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستانی ٹیم کا موجودہ کمبی نیشن شاندار ہے اور ہم نے حال ہی میں جو نتائج دیے ہیں وہ اس کا ثبوت ہیں۔

حال ہی میں ون ڈے کرکٹ میں تیز ترین ایک ہزار رنز مکمل کرنے کا عالمی ریکارڈ بنانے والے فخر نے کہا کہ اس وقت ہماری توجہ ورلڈ کپ پر نہیں آئندہ ماہ شیڈول ایشیا کپ پر ہے ور میری بھی پوری توجہ ایونٹ میں عمدہ کارکردگی دکھانے پر مرکوز ہے .

یقینا ورلڈ کپ ایک اہم ایونٹ ہے لیکن میرے لیے اس کی منصوبہ بندی کرنا قبل از وقت ہے کیونکہ اس سے قبل بھی کئی اہم انٹرنیشنل مقابلے شیڈول ہیں۔ایشیا کپ کا آغاز آئندہ ماہ متحدہ عرب امارات میں ہو گا جس میں دفاعی چمپئن بھارت، پاکستان، سری لنکا، بنگلہ دیش، افغانستان اور ایک کوالیفائر ٹیم شرکت کرے گی۔انہوں نے کہاکہ ون ڈے کرکٹ میں تیز ترین ہزار رنز کا سنگ میل عبور کرنے پر میں بہت خوش ہوں بلکہ مجھے اس بات پر بھی فخر ہے کہ میں نے جو ریکارڈ توڑا وہ اس سے قبل عظیم بلے باز سر ویوین رچرڈز کے نام تھا۔

اپنی ڈبل سنچری کے حوالے سے سوال پر اوپننگ بلے باز نے کہا کہ کپتان سرفراز احمد اور کوچ مکی آرتھر ہمیشہ مجھ سے کہتے تھے کہ مجھ میں ڈبل سنچری اسکور کرنے کی صلاحیت موجود ہے تاہم میں سوچتا کہ وہ میرا اعتماد بڑھانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

چوتھے ون ڈے میں سنچری اسکور کرنے کے بعد میں نے زیادہ سے زیادہ رنز بنانے کے لیے تیز کھیلنا شروع کردیا تاہم جب میراسکور 170 تک پہنچ گیا تو سرفراز اور آرتھر نے پیغام بھجوایا کہ ابھی کافی اوور باقی ہیں لہٰذا رسک نہ لیتے ہوئے ڈبل سنچری مکمل کرو جس کے بعد میں نے محتاط انداز اپناتے ہوئے ڈبل سنچری تک رسائی حاصل کی۔