شادی سے پہلے ناجائز تعلقات سے انکار پر منگیتر ’شیطان‘ بن گیا، لڑکی دوستوں کے حوالے کر دی

شادی سے پہلے ناجائز تعلقات سے انکار پر منگیتر ’شیطان‘ بن گیا، لڑکی دوستوں کے حوالے کر دی
سورس: فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر

فیصل آباد: شادی سے پہلے جنسی تعلقات قائم کرنے سے انکار پر منگیتر ’شیطان‘ بن گیا اور لڑکی کو اپنے دوستوں کے حوالے کر دیا جو اسے زیادتی کا نشانے کے بعد گھر کے قریب چھوڑ کر فرار ہو گئے، پولیس نے مقدمہ درج کر کے ملزمان کی تلاش شروع کر دی ہے۔ 

نجی خبر رساں ادارے کے مطابق فیصل آباد کے علاقے اویس نگر کی رہائشی 15 سالہ لڑکی کے منگیتر نے اسے شادی سے پہل جنسی تعلقات قائم کرنے پر مجبور کیا تاہم وہ انکار کر تی رہی جس پر اس کے منگیتر نے اسے بات کرنے کے بہانے گھر سے بلوا کر دوستوں کے حوالے کر دیا۔ 

لڑکے کے دوستوں نے مبینہ طور پر لڑکی کو مشروب میں شراب ملا کر پلادی اور پھر زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا اور 2 روز تک مری میں محبوس رکھنے کے بعد نیم بے ہوشی کی حالت میں اسے گھر کے قریب چھوڑ کر فرار ہو گئے۔

تھانہ بٹالہ کالونی پولیس نے واقعے کا مقدمہ درج کر دیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ اویس نگر کی رہائشی 15 سالہ لڑکی کی منگنی ایک سال قبل سیف نامی نوجوان سے ہوئی تھی جس نے منگنی کے بعد میزاب کو جنسی تعلقات قائم پر مجبور کیا اور اس دوران اس کی نازیبا وڈیوز بنا کر اسے بلیک میل کرنا شروع کردیا۔

بلیک میلنگ سے تنگ آ کر لڑکی نے منگنی ختم کرنے کی دھمکی دی جس کا بدلہ لینے کیلئے سیف نے اسے اپنے گھر بلایا اور کار میں اغواءکر کے لے گیا اور شراب پلا کر اپنے دوستوں بلاول، طیب اور ذیشان کے حوالے کر دیا۔ 

سیف کے دوستوں نے لڑکی کو مبینہ طور پر جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا اور اسے مری لے گئے جہاں 2 روز تک حبس بے جا میں رکھنے کے بعد اسے نیم بے ہوشی کی حالت میں گھر کے قریب چھوڑ کر فرار ہو گئے۔ 

پولیس نے لڑکی کا میڈیکل کروانے کے بعد چاروں ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کر کے ان کی گرفتاری کیلئے چھاپے مارنے شروع کر دئیے ہیں جبکہ متاثرہ لڑکی کی والدہ نے اعلیٰ حکام سے انصاف کی اپیل کی ہے۔