مردم شماری میں 2 لاکھ فوجی خدمات انجام دیں گے، آرمی چیف نے معاونت کے منصبوبے کی منظوری دے دی

مردم شماری میں 2 لاکھ فوجی خدمات انجام دیں گے، آرمی چیف نے معاونت کے منصبوبے کی منظوری دے دی

راولپنڈی:آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے چھٹی مردم شماری اور خانہ شماری منعقدکرنے میں مدد کیلئے منصوبے کی منظوری دے دی ہے،2لاکھ جوان مردم شماری میں معاونت کریں گے۔ ڈی جی آئی ایس پی آر میجرجنرل آصف عفور کے مطابق آرمی چیف نے مردم شماری اور خانہ شماری میں معاوت کے منصوبے کی منظوری دے دی ہے، پا ک فوج کے 2لاکھ جوان مردم شماری و خانہ شماری میں معاوت کریں گے۔پاک فوج کے جوان ملک کے تمام علاقوں میں جہاں ضرورت ہوگی اپنی ذمہ داریاں نبھائیں گے جبکہ فوج ضرب عضب آپریشن اور کراچی آپریشن جیسی دوسری سیکیورٹی زمہ داریاں بھی اداکرتی رہے گی.


واضح رہے کہ مردم شماری 15مارچ سے شروع ہو گی جو مرحلہ وار ہوگا۔پاکستان میں آخری بار مردم اور خانہ شماری 1998 میں کی گئی تھی تاہم لمبے وقفے کے بعد سپریم کورٹ  نے نوٹس لیتے ہوئے حکومت وقت کو مردم شماری کرنے کی ہدایت جاری کیں ، 1998 میں جب آخری مردم شماری ہوئی تھی ،اس وقت بھی نواز شریف   ملک کے وزیر اعظم تھے،آئین کے تحت ہر 10سال بعد مردم شماری ہونا ضروری ہے ، یہ مردم شماری 20سال بعد ہونے جارہی ہے۔ ایک محتاط اندازے کے مطابق پاکستان کی آبادی اس وقت 20 کروڑ سے تجاوز کرچکی.