لاہور، ہسپتال میں مردہ لڑکی چھوڑنے کے معاملے میں پیشرفت، جعلی ڈاکٹر اور دائی گرفتار

لاہور، ہسپتال میں مردہ لڑکی چھوڑنے کے معاملے میں پیشرفت، جعلی ڈاکٹر اور دائی گرفتار
کیپشن:   لاہور، ہسپتال میں مردہ لڑکی چھوڑنے کے معاملے میں پیشرفت، جعلی ڈاکٹر گرفتار اور دائی گرفتار سورس:   فائل فوٹو

لاہور: نجی ہسپتال میں لڑکی کو مردہ حالت میں چھوڑ کر فرار ہونے کے معاملے میں اہم پیشرفت ہوئی ہے۔ پولیس ذرائع کے مطابق مرکزی ملزم اسامہ کے بیان پر جھنگ سے ایک جعلی ڈاکٹر ، دائی اور ہیلپر کو بھی گرفتار کر لیا گیا ہے۔ ان گرفتاریوں کے بعد اس کیس میں اب تک دو خواتین سمیت چھ افراد کو حراست میں لیا جا چکا ہے جبکہ ملزم اسامہ چار روز کے جسمانی ریمانڈ پر پولیس کی تحویل میں ہے۔ 

پولیس کا کہنا ہے کہ مقدمے میں اسقاط عمل کی دفعہ کا اضافہ کرنے کے لئے قانونی رائے طلب کر لی گئی ہے جبکہ فارنزک رپورٹس آنے کے بعد کیس کی مزید تفتیش کی جائے گی۔ 

واضح رہے کہ گزشتہ روز پولیس نے گرفتار ملزم اسامہ کی نشاندہی پر اس کے دوست اویس جبکہ ایک خاتوں اور اس کے ساتھ مرد کو بھی گرفتار کر لیا ہے۔ 

دوران حراست ملزم اسامہ نے انکشاف کیا تھا کہ اسقاط حم کے دوران لڑکی کی طبعیت بگڑ گئی تھی جس کی وجہ سے اسے پسپتال لائے مگر وہ دم توڑ چکی تھی۔