بھارتی سپریم کورٹ انتہا پسند ہندوؤں سے ڈر گئی

بھارتی سپریم کورٹ انتہا پسند ہندوؤں سے ڈر گئی
سورس:   File photo

نئی دہلی ،بھارتی سپریم کورٹ نے سیف علی خان سمیت فلم " تانڈو" کی پروڈکشن ٹیم کی قبل ازوقت گرفتاری ضمانت کی درخواست مسترد کردی ۔ 

دہلی کی سیاست کے موضوع پر  ہدایت کار علی عباس ظفر کی ویب سیریز ’تانڈو‘ رواں ماہ ریلیز ہوئی جس میں مختلف طبقوں کی طرف ے اقتدار میں آنے کی  جنگ دکھائی گئی۔یہ جنگ بھارت کی  انتہا پسند ہندو تنظیموں کو پسند نہ آئی جس کے بعد انہوں نے ویب سیریز انتظامیہ اور اداکاروں کے خلاف محاذ کھول دیا۔

 بھارتی انتہا پسند تنظیم نے ویب سیریز بنانے والوں کی زبان کاٹنے والوں کو ایک کروڑ روپے دینے کا بھی اعلان کررکھا ہے۔ حکمران جماعت بی جے پی کے کئی رہنماؤں اور انتہا پسند ہندوؤں کی ایما پر فلم کے ہدایت کار سمیت پوری کاسٹ کے خلاف ایف آئی آر بھی درج کروادی گئی ہے ۔ 

ایف آئی آر درج ہونے کے بعد ویب سیریز انتظامیہ نے سپریم کورٹ میں ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست دائر کی تھی جس پر سپریم کورٹ نے بھی ہاتھ اُٹھاتے ہوئے درخواست مسترد کردی۔

سپریم کورٹ نے قبل از گرفتاری کی درخواست مسترد کرنے کے بعد اس بات پر ہامی بھرلی ہے کہ وہ اس کیس کو اترپردیش سے ممبئی منتقل کرنے پر نظرثانی کریں گے۔

واضح رہے کہ ویب سیریز ’ تانڈو‘ کے فنکار اور انتظامیہ کے خلاف اب تک اترپردیش میں تین مقدمات درج کیے جا چکے ہیں جب کہ دیگر ریاستوں میں بھی مقدمات درج ہیں۔