کورونا کے دوبارہ سر اٹھانے کی بڑی وجہ سامنے آگئی

کورونا کے دوبارہ سر اٹھانے کی بڑی وجہ سامنے آگئی

لاہور: اومی کرون اور کورونا کے دوبارہ سر اٹھانے کی وجہ سامنے آگئی ،  محکمہ صحت کے افسران  ہی کورونا کے پھیلاؤ کا سبب نکلے ۔

نیو نیوز نے تیزی سے کورونا اور اومیکرون کے کیسز بڑھنے کی وجہ دریافت کر لی، محکمہ صحت کے افسران ہی ملوث نکلے۔آڈیو ریکارڈنگ میں ہوشربا انکشافات سامنے آگئے۔

 ریکارڈنگ میں  افسران ملازمین کو ووٹر لسٹوں سے کورونا ویکسین کی جعلی انٹریاں ڈالنے کی ہدایت  کر تے رہے، جس کے باعث صوبائی دارالحکومت میں  ویکسی نیشن    کا ٹارگٹ پورا کرنے  کے  نام پر لاکھوں جعلی اندراج  ہوئے ۔

ڈی ڈی ایچ اوز نے خود سی ای او لاہور اور  ڈی او پی ایس کے نام کے ساتھ ملازمین کو  ووٹر لسٹوں سے  ویکسی نیشن اندراج کی ہدایات دیں،  جبکہ   تمام ملازمین   کے دوسرے شہروں میں موجود اپنے جاننے والوں اور  رشتہ داروں کے شناختی کارڈ منگوا کر ان کا بھی اندراج   کرنے کا کہا گیا اور   ٹارگٹ سے کم کوریج رپورٹ دینے والے ملازمین کو   ملازمت سے نکالنے کی دھمکیاں   بھی دی جاتی رہیں۔ 

افسران کی جانب سے ویکسین کے جعلی اندراج کے باعث شہر کے ویکسی نیشن سینٹرز پر آئے روزانہ درجنوں  افراد کو بتایا جاتا ہے  کہ ان کی ویکسی نیشن کا اندراج پہلے ہی ہوچکا جس سے نہ صرف شہریوں کو خواری کا سامنا رہا بلکہ کورونا کا پھیلاؤ مزید تیز ہوتا چلا گیا۔  

ادھر جعلی انٹریوں کے باعث پنجاب میں کورونا کی لاکھوں ڈوز ضائع  ہونے کا خدشہ ہے ۔

قبل ازیں پنجاب کے ضلع چنیوٹ میں جعلی اندراج کی  باعث بچ جانے والی ویکسین کو گندے نالوں میں پھینکنے کا اسکینڈل بھی سامنے آ چکا    ہے ۔