’مدمقابل کھلاڑیوں کو میسر سہولتیں مجھے بھی ملتیں تو میڈل جیت جاتا‘

’مدمقابل کھلاڑیوں کو میسر سہولتیں مجھے بھی ملتیں تو میڈل جیت جاتا‘
سورس: فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر

ٹوکیو: ٹوکیو اولمپکس میں میڈل نہ جیت کر بھی پاکستانیوں کے دل جیتنے والے ویٹ لفٹر طلحہ طالب نے کہا ہے کہ مدمقابل کھلاڑیوں کو جو سہولتیں میسر تھیں، اگر مجھے بھی ملتیں تو میڈل جیت جاتا۔ 

پاکستان کے ویٹ لفٹر طلحہ طالب ٹوکیو اولمپکس میں اتوار کے روز ہونے والے ویٹ لفٹنگ کے مقابلوں کے دوران صرف دو کلوگرام کے فرق کی وجہ سے ایک یقینی تمغے سے محروم رہ گئے اور پانچویں پوزیشن پر آئے مگر وہ اپنی محنت اور کارکردگی سے پاکستانیوں کے جیت جیتنے میں ضرور کامیاب رہے۔ 

طلحہ طالب نے میڈل نہ جیتنے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ صرف دو کلو گرام سے میڈل نہ جیت سکا، مد مقابل کھلاڑیوں کو جو سہولتیں میسر تھیں اگر مجھے بھی ملتیں تو میڈل جیت جاتا، لوگوں کی دعاؤں کے بغیر میرے لئے یہ سفر ممکن نہ تھا، جن لوگوں نے سپورٹ کیا ان کا شکر گزار ہوں، مستقبل میں بہتر کارکردگی سے پاکستان کا نام روشن کروں گا۔

 واضح رہے کہ 21 سالہ طلحہ طالب کا تعلق گوجرانوالہ سے ہے جنہوں نے کامن ویلتھ چیمپین شپ اور انٹرنیشنل سالیڈیریٹی چیمپین شپ میں پاکستان کیلئے سونے کے تمغے جیتے جبکہ آسٹریلیا میں ہونے والے کامن ویلتھ گیمز میں بھی شاندار کارکردگی دکھائی تھی۔

علاوہ ازیں اس سال ہونے والی ایشین ویٹ لفٹنگ چیمپین شپ میں انہوں نے کانسی کا تمغہ جیتا تھا جس کے بعد انہیں ٹوکیو اولمپکس میں وائلڈ کارڈ پر شرکت کیلئے منتخب کیا گیا تھا۔