نیویارک : شادی ساری زندگی ایک ساتھ خوشیاں سمیٹنے کا نام ہے تاہم بعض وجوہات پر میاں بیوی کے درمیان طلاق ہو جاتی ہے۔بنی نوع آدم کے اس مسئلے کا سویڈن کے ایک ہوٹل نے انوکھی پیشکش کرکے نکالا۔

ہوٹل انتظامیہ نے اپنے مہمانوں کو ایک اچھوتی پیش کش کی ہے، شادی شدہ جوڑے ان کی کسی بھی برانچ میں دو راتوں کے لیے ٹھہریں، اس کے ایک سال کے اندر اندر اگر جوڑے کی طلاق ہو گئی تو پیسے واپس دے دیے جائیں گے۔

 فرانسیسی نیوز ایجنسی اے ایف پی کی سٹاک ہوم سے ملنے والی رپورٹوں کے مطابق، ہوٹلوں کی یہ سویڈش چین اپنے رومانوی ماحول کی وجہ سے کافی مقبول ہے۔ اس ہوٹل کی سویڈن کے کئی سیاحتی مقامات پر درجنوں برانچیں ہیں۔

ہوٹل انتظامیہ نے اپنے مہمانوں کے لیے ایک منفرد اور اچھوتی پیش کش کی ہے۔ اس آفر میں ہوٹل انتظامیہ کا کہنا ہے کہ شادی شدہ جوڑے دو راتوں کے لیے ان کے لگڑری ہوٹل یا مینشن میں کمرہ لے کر ٹھہریں۔

اور اگر ان کے ہاں قیام کرنے کے ایک برس کے اندر اندر ان کی شادی ٹوٹ جائے تو جوڑے کو ان کی پوری کی پوری رقم واپس دے دی جائے گی