اگر آپ 11سے 18 سال کی عمر کے دوران یہ کام کرتے تھے تو کینسر کا شکار ہونے کا خطرہ بے حد زیادہ ہے

ہم سب کو یہ بات اچھی طرح معلوم ہے کہ سوڈا(پیپسی اور کوک وغیرہ)میں چینی کی بہت زیادہ مقدار ہوتی ہے

اگر آپ 11سے 18 سال کی عمر کے دوران یہ کام کرتے تھے تو کینسر کا شکار ہونے کا خطرہ بے حد زیادہ ہے

لندن: ہم سب کو یہ بات اچھی طرح معلوم ہے کہ سوڈا(پیپسی اور کوک وغیرہ)میں چینی کی بہت زیادہ مقدار ہوتی ہے اور ان کے پینے سے انسان ذیابیطس جیسی موذی بیماری کا شکار ہوجاتا ہے جبکہ انرجی ڈرنکس کی وجہ سے دل کے امراض لاحق ہوتے ہیں۔ان دونوں مشروبات پر کئی تحقیقات بھی ہوچکی ہیں اور ان کے نقصانات کے بارے میں کافی کچھ لکھا جاچکا ہے لیکن اس کے باوجودنوجوان (بالخصوص11سے18سال کے درمیان)ان کا بہت زیادہ استعمال کرتے ہیں اور اس عمر میں ان مشروبات کا استعمال کینسر جیسے مرض کی وجہ بن سکتا ہے۔


برطانیہ کے کینسر ریسرچ کی جانب سے اس سلسلے میں ایک تحقیق کی گئی اور اعداد وشمار کے تجزیے کے بعد یہ بات سامنے آئی کہ اس عمر کے لوگ بہت زیادہ میٹھی مشروبات کا استعمال کرتے ہیں جس کی وجہ سے بچوں میں موٹاپے کی شرح میں اضافہ ہوتا ہے اور وقت کے ساتھ یہ مرض کینسر میں تبدیل ہونے لگتا ہے۔تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ صرف چینی کی مقدار کم کرنے سے ہم آنے والے دنوں میں 3.7ملین افراد جو کینسر سے بچاسکتے ہیں۔ادارے کے ڈائریکٹر ایلی سین کاکس کا کہنا ہے کہ یہ بات انتہائی تشویشناک ہے کہ اس عمر کے لوگ باتھ ٹب جتنی مقدار کی بوتلیں ایک سال میں پی رہے ہیں جو کہ ان کی صحت کے لئے انتہائی مضر ہے۔