بجلی کی قیمت میں 1.27روپے فی یونٹ اضافہ کی منظوری تشویشناک ہے، افتخار بشیر

بجلی کی قیمت میں 1.27روپے فی یونٹ اضافہ کی منظوری تشویشناک ہے، افتخار بشیر
Photo Credit Social Media

لاہور:  تاجر رہنما و صدر گرائنڈنگ ملز  ایسوسی ایشن پاکستان چوہدری افتخار بشیر سابق ایگزیکٹو ممبر لاہور چیمبرآف کامرس نے صارفین کے لیے بجلی کی قیمتوں میں1.27روپے فی یونٹ اضافہ کی منظوری پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ بجلی کی قیمتوں میں اضافہ سے کاروباری لاگت میں اضافہ ہوگا اور عوام کیلئے مہنگائی مزید بڑھے گی۔


ان خیالات کا اظہار انہوں نے گرائنڈنگ ملز ایسوسی ایشن کے صنعتکاروں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ افتخار بشیر چوہدری نے کہا کہ سینٹ کمیٹی کی رپورٹ کے مطابق2017-18میں بجلی چوری کی وجہ سے توانائی شعبے کو 53ارب روپے کا نقصان اٹھانا پڑا ۔بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کی غفلت کی وجہ سے توانائی شعبے کو پچھلے ایک سال میں213ارب روپے کا نقصان ہوا جس کا خمیازہ صارفین کو بھگتنا پڑتا ہے کیونکہ نقصانات کو پورا کرنے کیلئے حکومت بجلی کی قیمت میں اضافہ کردیتی ہے جو عوام کے ساتھ زیادتی ہے.

انہوں نے کہا کہ مہنگی بجلی صنعتی ترقی کی راہ میں رکاوٹ ہے مہنگی اشیاء کے باعث ملک برآمدات میں کمی اور تجارتی خسارہ بڑھ رہا ہے۔اس لیے حکومت بجلی مہنگی کرنے کی بجائے سستی کرے۔ حکومت  بجلی کی چوری روکے اور نقصانات پر قابو پائے کیونکہ ان کی وجہ سے توانائی شعبے کو اربوں روپے کا نقصان پہنچ رہا ہے جس کی قیمت صارفین کو مہنگی بجلی کی صورت میں ادا کرنا پڑتی ہے جو صارفین کے ساتھ سراسر زیادتی ہے۔