صوبوں کی حکومتیں نہ گئیں تو گورنر راج لگانے جا رہے ہیں: میاں جاوید لطیف 

صوبوں کی حکومتیں نہ گئیں تو گورنر راج لگانے جا رہے ہیں: میاں جاوید لطیف 

شیخوپورہ: پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنماءاور وفاقی وزیر میاں جاوید لطیف نے کہا ہے کہ صوبوں کی حکومتیں نہ گئیں تو گورنر راج لگانے جا رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق شیخوپورہ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے جاوید لطیف نے کہا کہ عمران خان نے اسمبلیوں سے باہر آنے کا کہا ہے تو بسم اللہ کریں، ہم اس سے پہلے ہی پنجاب میں عدم اعتماد لانے کا فیصلہ کر چکے ہیں۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ غیر ملکی ایجنڈا مسلط کرنے والوں پر ہاتھ ڈالنے کا وقت آگیا ہے، ہم کہتے تھے کوئی عالمی سازش نہیں ہے جو درست ثابت ہوا، ریاست کو نقصان پہنچانے کے بعد کہا گیا کوئی عالمی سازش نہیں، حقیقی آزادی اس دن ختم ہوگئی جس دن تم نے کہا اس سازش میں امریکہ ملوث نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ خیبرپختونخوا میں بھی عدم اعتماد لانا مشکل نہیں ہے، اگر عدم اعتماد نہیں لا سکے تو گورنر راج لگائیں گے جبکہ نواز شریف انشاءاللہ چند ہفتوں تک عوام کی قیادت کرتے نظر آئیں گے، کسی کو بھی تاحیات نااہل کرنا بڑا جرم ہے، سپریم کورٹ سے روشنی کی کرن نظر آ رہی ہے، نواز شریف کی نااہلی ختم ہوئی تو اسے ڈیل کہا جائے گا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ کسی بھی سیاسی پارٹی کے ورکر پر تشدد نہیں ہونا چاہیے، پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے کسی ورکر نے 15 دن بھی جیل نہیں کاٹی، ہم نے پاکستان کے مفاد کے خلاف کسی چینل پر بات نہیں کی لیکن فتنہ خان کے غیر ذمہ دارانہ رویہ نے دشمن فوج کو جارحیت کا موقع دیا۔ 

جاوید لطیف نے کہا کہ جب تم پاک فوج کے متعلق بات کرتے ہو تو احسان فراموش لگتے ہو، ہم نے ریاست کیلئے اپنی سیاست کی قربانی دی، جب ریاستی ادارے تقسیم کرنے کی بات ہوگی تو کیا ہم خاموش بیٹھیں گے۔

مصنف کے بارے میں