نعمان نیاز اور شعیب اختر کے درمیان لائیو پروگرام میں جھڑپ، پی ٹی وی نے انکوائری کمیٹی قائم کر دی

نعمان نیاز اور شعیب اختر کے درمیان لائیو پروگرام میں جھڑپ، پی ٹی وی نے انکوائری کمیٹی قائم کر دی
سورس: فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر

لاہور: پاکستان ٹیلی ویژن (پی ٹی وی) انتظامیہ نے فاسٹ باؤلر شعیب اختر کے ساتھ پروگرام میں پیش آنے والے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے انکوائری کمیٹی قائم کردی ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز سرکاری ٹیلی ویژن پر نشر ہونے والے ایک پروگرام میں میزبان نعمان نیاز نے سابق فاسٹ باؤلر شعیب اختر کیساتھ ہتک آمیز رویہ اپنایا جس پر سوشل میڈیا صارفین اور مختلف صحافیوں کی جانب سے انہیں کڑی تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے اور نعمان نیاز کو ہٹانے کا مطالبہ بھی کیا گیا ہے۔ 

پی ٹی وی انتظامیہ اس معاملے پر حرکت میں آ گئی ہے جس نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے انکوائری کمیٹی قائم کر دی ہے جو شعیب اختر اور نعمان نیاز کے درمیان پیدا ہونیوالی صورتحال پر تحقیقات کرے گی۔ 

ذرائع کے مطابق تحقیقاتی کمیٹی کا پہلا اجلاس آج ہوگا جس میں پی ٹی وی کے پروگرام کے متعلقہ کلپ کا مکمل جائزہ لیا جائے گا جبکہ شعیب اختر اور نعمان نیاز کا بھی بیان ریکارڈ کرائے جانے کاامکان ہے

دوسری جانب ڈاکٹر نعمان نیاز اس معاملے پر بالکل بھی شرمندہ نہیں ہیں جنہوں نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری پیغام میں کہا کہ میں حیران ہوں کہ کیسے کوئی شعیب اختر کو صرف ایک سٹار کے طور پر یاد کر سکتا ہے، وہ تو ’بیسٹ آف دی بیسٹ‘ ہیں اور ہمیشہ رہیں گے، شعیب اختر ملک کیلئے جو اعزازات لائے ان سے کوئی بھی انکار نہیں کر سکتا۔

انہوں نے مزید لکھا کہ ایک طرف کی کہانی ہمیشہ اپنی طرف متوجہ کرتی ہے۔ ہم طویل عرصے سے دوست ہیں، میں ہمیشہ ان کے بہتر مستقبل کیلئے دعا گو ہوں۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز سرکاری ٹی وی پر ورلڈکپ کی براہ راست نشریات کے دوران شعیب اختر اور پی ٹی وی سپورٹس کے میزبان نعمان نیاز میں نوک جھونک ہوئی، شعیب اختر نے لائیو پروگرام میں حارث روف کی کارکردگی کی خوب تعریف کی جو میزبان اینکر نعمان نیاز کو پسند نہ آئی۔ 

گفتگو کے دوران میزبان ڈاکٹر نعمان نیاز نے شاہین شاہ آفریدی کا ذکر کیا تو شعیب اختر نے کہا کہ وہ حارث رؤف کی بات کررہے ہیں جس پر وہ غصے میں آگئے اور لائیو پروگرام میں شعیب اختر کو شو سے جانے کا کہا اور فوری طور پر بریک لے لی تاہم بریک کے بعد شعیب اختر نے لائیو پروگرام کے دوران سرکاری ٹی وی سے مستعفی ہونے کا اعلان کردیا اور پروگرام چھوڑ کر چلے گئے۔