ذیشان بٹ قتل کیس، مرکزی ملزم کو 15 روز میں گرفتار کرنے کا حکم

ذیشان بٹ قتل کیس، مرکزی ملزم کو 15 روز میں گرفتار کرنے کا حکم
عدالت عظمیٰ نے آئی جی پنجاب کو 15 روز میں مرکزی ملزم کو گرفتار کرنے کا حکم دے دیا۔۔۔فائل فوٹو

لاہور: چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے انسپکٹر جنرل (آئی جی) پنجاب کیپٹن (ر) عارف نواز کو سمبڑیال میں صحافی ذیشان بٹ کو قتل کرنے والے مرکزی ملزم کو 15 روز میں گرفتار کرنے کا حکم دے دیا۔


چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 2 رکنی بینچ نے سمبڑیال میں صحافی ذیشان بٹ کے قتل سے متعلق ازخود نوٹس کی سماعت کی۔

مزید پڑھیں: 'خیبرپختوانخوا اور سندھ کو کھنڈر بنانے والے کس منہ سے عوام کے پاس جائیں گے'

سماعت کے دوران آئی جی پنجاب پیش ہوئے اور عدالت کو بتایا کہ اب تک مرکزی ملزم گرفتار نہیں کر سکے۔ عدالت عظمیٰ نے آئی جی پنجاب کو 15 روز میں مرکزی ملزم کو گرفتار کرنے کا حکم دے دیا۔ چیف جسٹس نے آئی جی پنجاب کو مخاطب کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ آپ جانتے ہیں معاملہ کتنا اہم ہے خود احساس کریں۔

واضح رہے کہ مذکورہ کیس کی 14 اپریل کو ہونے والی سماعت کے دوران چیف جسٹس نے آئی جی پنجاب کو ذیشان بٹ کے قتل کے مرکزی ملزم کو 10 روز میں گرفتار کرنے کا حکم دیا تھا۔

یاد رہے کہ صحافی ذیشان بٹ کو 27 مارچ کی دوپہر کو سمبڑیال میں اُس وقت قتل کر دیا گیا تھا جب وہ دکانداروں پر عائد کیے جانے والے ٹیکس کے حوالے سے معلومات لینے یونین کونسل بیگوالا کے دفتر پہنچے تھے۔

یہ بھی پڑھیں: 'حکومت کی جانب سے پیش کیے گئے بجٹ پر تبصرہ کرنا بے معنی ہے'

اس موقع پر ذیشان بٹ پر تین گولیاں فائر کی گئی تھیں جس کے بعد مرکزی ملزم یوسی چیئرمین عمران چیمہ موقع سے فرار ہو گیا تھا۔ ساتھ ہی ملزم کے اہلخانہ بھی علاقہ چھوڑ کر جا چکے ہیں۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں