سری لنکا کی کابینہ نے برقعے پر پابندی عائد کردی

سری لنکا کی کابینہ نے برقعے پر پابندی عائد کردی
سورس:   file photo

کولمبو، سری لنکا کی کابینہ نے برقعے پر پابندی عائد کردی ۔سری لنکن کابینہ نے اقوام متحدہ کی طرف سے اس کو عالمی قوانین کی خلاف ورزی قرار دیئے جانے کے باوجود پابندی لگائی ۔

تفصیلات کے مطابق سری لنکا کی پبلک سیکورٹی کے وزیر نے برقعے پر پابندی عائد کرنے کی تجویز دی تھی ۔جس کے بعد اس تجویز کی  سری لنکا کی کابینہ نے تائید کی ۔

سری لنکا کی کابینہ نے قومی سلامتی کو برقعے پر پابندی عائد کرنے کی بنیاد قرار دیا۔ کابینہ نے مسلم خواتین کے حجاب سمیت برقعے پر پابندی عائد کرنے کی تجویز کی منظوری دے دی ۔ منظوری کے بعد اب اسے اٹارنی جنرل کو بھیجا جائے گا جب کہ اسے قانون کی شکل دینے کے لیے پارلیمنٹ سے منظوری ضروری ہے۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا ہےکہ پارلیمنٹ میں حکومت کی اکثریت کے باعث کابینہ کی منظوری کے بعد برقعے پر پابندی کے قانون کو باآسانی منظور کرلیا جائے گا۔

سری لنکا کے وزیر برائے پبلک سکیورٹی سرتھ ویرسکارا نے مسلمان خواتین کی جانب سے لیے جانے والے برقعے کو مذہبی شدت پسندی کی علامت قرار دیا اور کہا کہ برقعے پر پابندی قومی سلامتی کو بہتر کرے گی۔

میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہےکہ سری لنکا میں 2019 کے ایسٹر خودکش دھماکے کے بعد برقعہ پہننے پر عارضی پابندی عائد کی گئی تھی، اس خودکش دھماکے میں 260 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

اس حوالے سے سری لنکا میں پاکستان کے سفیر سعد خٹک نے گزشتہ ماہ برقعے پر پابندی عائد کیے جانے سے متعلق خبر کو ٹوئٹر پر شیئر کرتے ہوئے کہا تھا کہ اس سے مسلمانوں کے جذبات کو ٹھیس پہنچے گی۔