پائلٹ کی رہائی کے بعد بھارتی میڈیا کاحیران کن رد عمل سامنے آگیا

پائلٹ کی رہائی کے بعد بھارتی میڈیا کاحیران کن رد عمل سامنے آگیا
فوٹو فائل

اسلام آباد: پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے آج وزیراعظم عمران خان نے پاک فوج کی زیر حراست بھارتی پائلٹ کو کل رہا کرنے کا اعلان کیا۔ ایک طرف جہاں پاکستان نے بھارتی قیدی کو رہا کرنے کا حکم دے کر مہذب ملک ہونے کا تاثر دیا وہیں دوسری جانب بھارت وزیراعظم عمران خان کے اس اعلان کو اپنی فتح قرار دے کرہٹ دھرمی کا مظاہرہ کر رہا ہے۔


بھارتی ٹی وی چینلز پر چلائی جانے والی رپورٹس میں کہا جا رہا ہے کہ چونکہ بھارت نے پاکستان سے پر زور مطالبہ کیا تھا اسی لیے پاکستان بھارتی پائلٹ کو رہا کرنے پر مجبور ہو گیا۔ سوشل میڈیا صارفین نے پاکستان کے اس جذبہ خیر سگالی کے تحت کیے گئے فیصلے کا خیر مقدم کیا اور اس پر پراپیگنڈہ کرنے پر بھارتی میڈیا کو آڑے ہاتھوں لے لیا اور کہا کہ پاکستان نے مہذب ملک ہونے کا ثبوت دیا۔

پہلے بھارتی پائلٹ کے ساتھ پاکستان میں حسن سلوک کیا گیا اور اب پاکستان نے بغیر کسی شرط کے بھارتی پائلٹ کو رہا کرنے کا حکم دے دیا ہے جو بلا شبہ امن کی جانب پاکستان کی ایک اور کوشش ہے۔ بھارت کو اب ہوش کے ناخن لینے چاہئیں اور پاکستان کی امن کی خواہش اور جذبہ خیر سگالی کو پاکستان کی کمزوری سمجھنے کی غلطی نہیں کرنی چاہئیے۔ مودی سرکار کو چاہئیے کہ پاکستان کے اس فیصلے کا خیر مقدم کرے نہ کہ بے شرمی کی انتہا کرتے ہوئے اسے اپنی فتح قرار دے کر سیاسی مقاصد کے لیے استعمال کرے۔

یاد رہے کہ اب سے کچھ دیر قبل وزیراعظم عمران خان نے پاک فوج کی زیر حراست بھارتی پائلٹ کو رہا کرنے کا اعلان کیا۔ پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ بھارت کا ایک پائلٹ پاکستان کی حراست میں ہے اور میں یہ کہنا چاہتا ہوں کہ ہم بھارتی پائلٹ کو کل رہا کردیں گے، بھارت کو کہتا ہوں کہ حملے سے باز رہے، ورنہ ہمیں مجبوراً حملے کا جواب دینا پڑے گا۔