حکومت نے دھرنے کا معاملہ بھی پارلیمنٹ میں لانے سے گریزکیا: خورشید شاہ

حکومت نے دھرنے کا معاملہ بھی پارلیمنٹ میں لانے سے گریزکیا: خورشید شاہ

اسلام آباد:قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈرخورشید شاہ نے کہا ہے کہ مسلم لیگ (ن) ہمیشہ پارلیمنٹ سے دوررہتی ہے اورحکومت نے دھرنے کا معاملہ بھی پارلیمنٹ میں لانے سے گریزکیا،پیپلزپارٹی نے ہمیشہ پارلیمنٹ سے طاقت لی اورپارلیمنٹ کی قوت کو بڑھایا،حکومت نے جس طرح صورتحال کو ہینڈل کیا عدالت میں بھی اس حوالے سے ریمارکس سامنے آئے،امید ہے 11دسمبر سے پہلے سینٹ میں حلقہ بندیوں کے بل کی منظوری کا کوئی حل نکل آئے گا ۔


میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے اپوزیشن لیڈرخورشید شاہ نے کہا کہ دھرنے سے دنیا میں پاکستان کے بارے میں منفی پیغام گیا، پیپلزپارٹی ساری صورتحال پرپریشان ہے، پیپلزپارٹی نے ہمیشہ پارلیمنٹ سے طاقت لی اورپارلیمنٹ کی قوت کو بڑھایا، پیپلزپارٹی کو پاکستان کے مثبت امیج، خود مختاری اورسالمیت کی فکر ہے اور بحران میں واضح پیغام دیا کہ ہم جمہوریت اورپارلیمنٹ کے ساتھ کھڑے ہیں۔

اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ مسلم لیگ ن جن کو اپنا حلقہ سمجھتی تھی وہی اسلام آباد دھرنے میں ان کے سامنے کھڑے ہوئے، خورشید شاہ نے کہا کہ نوازلیگ ہمیشہ پارلیمنٹ سے دوررہتی ہے، حکومت نے دھرنے کا معاملہ پارلیمنٹ میں لانے سے گریز کیا، حالیہ دھرنے کے بعد پاکستان کے بارے میں عالمی سطح پر منفی لکھا گیا اور حکومت نے جس طرح صورتحال کو ہینڈل کیا عدالت میں بھی اس حوالے سے ریمارکس سامنے آئے۔خورشید شاہ نے نئی حلقہ بندیوں کے بل کی سینٹ سے منظوری کا معاملے پرکہا کہ سینیٹ کااجلاس دوبارہ ہونے سے پہلے حل نکلنے کی امید ہے۔