74 سالہ ننجا چور پر 30 ملین 'ین' کا جرمانہ عائد

74 سالہ ننجا چور پر 30 ملین 'ین' کا جرمانہ عائد

جاپان: پولیس کو اپنی انگلیوں پر نچانے والا ننجا چور طویل کوششوں کے بعد پکڑا گیا، منہ کو ڈھانپے اور سیاح لباس میں ملبوس ننجا چور جاپان کے شہر اوساکا میں گزشتہ کئی سالوں سے چوریاں کر رہا تھا اور اس نے پولیس کی ناک میں دم کررکھا تھا، ننجا چور اپنی وارداتوں کے دوران کئی بار سکیورٹی کیمروں کی آنکھوں میں آیا لیکن پھر بھی پولیس اسے گرفتار کرنے میں ناکام رہی۔


پولیس کے مطابق ننجا چور اپنی پھرتیوں کی وجہ سے چوری کرنے کے بعد گلیوں میں بھاگنے کی بجائے دیواروں کو پھلانگتے ہوئے لوگوں کی نظروں سے بہت جلد اوجھل ہوجاتا تھا، تاہم اب وہ قانون کی گرفت میں آچکا ہے، پولیس کی جانب سے ننجا چور پر 30 ملین 'ین' کا جرمانہ بھی عائد کیا گیا ہے۔

سب سے دلچسپ بات یہ ہے کہ پولیس اس چور کی تلاش میں پچھلے 8 برس سے مسلسل چھاپے مار رہی تھی اور پولیس کا خیال تھا کہ پھرتیلا چور کوئی نوجوان لڑکا ہے، لیکن 74 سالہ بابا نے کمال مہارت کی پھرتیاں دکھا کر پولیس کو نہ صرف پریشان کئے رکھا بلکہ 250 سے زائد وارداتیں بھی کر چکا ہے تاہم اب وہ پولیس کی گرفت میں ہے۔

گرفتار ہونے کے بعد ننجا چور کا کہنا تھا میں 74 سال کا ہوں تو پولیس کا مجھے پکڑنا مشکل تھا اگر میں جوان ہوتا تو پولیس کا پکڑنا ناممکن ہوتا، پولیس کے مطابق ننجا چور کی ہمت اور جسمانی طاقت ایک نوجوان سے کہیں زیادہ ہے۔