روہنگیا مہاجرین کی کشتی الٹنے سے مزید 14 افراد جاں بحق

کاکس بازار: میانمار کی ریاست راکھائن میں حکومتی سرپرستی میں ہونے والے مظالم کی وجہ سے نقل مکانی پر مجبور روہنگیا مسلمانوں کی کشتی ڈوبنے سے 10 بچوں سمیت 14 افراد جاں بحق ہو گئے۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق روہنگیا مہاجرین سمندری راستے سے بنگلا دیش پہنچنے کی کوشش کر رہے تھے کہ ان کی کشتی سمندر کی بے رحم موجوں کی نذر ہو گئی۔ جاں بحق ہونے والوں میں 10 بچے اور 4 خواتین شامل ہیں۔

عینی شاہدین اور زندہ بچ جانے والے افراد نے بتایا کہ ساحل سے تھوڑے فاصلے پر کشتی کسی ابھری ہوئی شے سے ٹکرائی اور الٹ گئی۔ بعد ازاں کشتی کے دو ٹکڑے ہو گئے اور وہ ساحل پر پہنچ گئی۔ایک مقامی دکاندار نے بتایا کہ خواتین اور بچے ہماری آنکھوں کے سامنے ڈوبے اور کچھ دیر بعد ان کی لاشیں ساحل پر موجود تھیں۔

خیال رہے کہ رواں برس 25 اگست کو ریاست راکھائن میں شروع ہونے والے فوجی آپریشن کے بعد سے اب تک بنگلادیش نقل مکانی کی کوشش کرنے والے 120 روہنگیا مسلمان ڈوب کر جاں بحق ہوچکے ہیں جن میں اکثریت بچوں اور خواتین کی تھی۔ دوسری جانب اقوام متحدہ کے اعداد و شمار کے مطابق 25 اگست سے اب تک 4 لاکھ 80 ہزار روہنگیا مسلمان بنگلادیش ہجرت کر چکے ہیں.

مصنف کے بارے میں