جے یو آئی ایف کے رہنما مولانا محمد حنیف پر دہشتگردوں کا حملہ

جے یو آئی ایف کے رہنما مولانا محمد حنیف پر دہشتگردوں کا حملہ

چمن :دہشتگردوں کا ایک دفعہ پھر پاکستان پر وار ،چمن میں تاج روڈ پر موٹر سائیکل میں نصب بم کے ذریعے جے یو آئی ایف کے رہنما مولانا محمد حنیف کو نشانہ بنا یا گیا ,بم دھماکے کے نتیجے میں جے یو آئی ایف کے رہنما مولانا محمد حنیف دم توڑ گئے ,محمد حنیف مولانا فضل الرحمن کے قریبی ساتھیوں میں سے تھے ۔


تفصیلات کے مطابق ہفتہ کو پاک افغان سرحدی شہر چمن میں تاج روڈ کے مقام پر موٹر سائےکل میں نصب بم دھما کہ ہوا جس کے نتیجے میں جمعیت علماءاسلا م کے مرکزی جوائنٹ سیکرٹری مولانا محمد حنیف سمیت 19افراد زخمی ہوگئے ،دھماکے کے بعد پولیس ، لیویز ،ایف سی سمیت ریسکیو اہلکاروں کی بڑی تعداد جائے وقوعہ پر پہنچ گئی اور زخمیوں کو سول ہسپتال چمن منتقل کردیا جہاں دوران علاج دو زخمی جاں بحق ہوگئے جبکہ مولانا محمد حنیف کو شدےد زخمی حالت میں کوئٹہ منتقل کیاجا رہا تھا کہ اسی دوران وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسے جس سے واقعہ میں شہداءکی تعداد تین ہوگئی ۔

سکیورٹی حکام کے مطابق دھما کے میں مولانا محمد حنیف کو نشانہ بنایاگیادھماکہ خیز مواد انکے دفتر کے باہر کھڑی موٹر سائیکل میں نصب کیا گیا تھا جوں ہی مولانا محمد حنیف دفتر سے باہر نکلے دھما کہ ہوگیا ،حکام کے مطابق دھما کہ کی شدت سے قرےبی عمارتوں کے شےشے ٹوٹ گئے جبکہ متعد د موٹر سائیکلیںاور گاڑیاں بھی تباہ ہوگئیں ۔

جمعیت علماءاسلام کے ذرائع کے مطابق مولانا محمد حنیف پارٹی کے مرکزی جوائنٹ سیکرٹری اور مولانا فضل الرحمن کے قریبی ساتھیوں میں سے تھے جبکہ قبائلی اورعلاقائی اعتبار سے بھی وہ بااثر شخصیت تھے، پارٹی ذرائع کے مطابق مولانا محمد حنیف کی میت کو انکی آبائی علاقے میں سپر د خاک کیا جائےگا، دوسری جانب سکیورٹی فورسز نے جائے وقوعہ کوگھےر ے میں لیکر شواہد اکھٹے کر لئے جبکہ چمن شہر کی سکیورٹی مزید سخت کردی گئی۔