بجٹ 19-2018: فلم انڈسٹری کی بحالی کے لیے 4 نکاتی پیکیج کا اعلان

بجٹ 19-2018: فلم انڈسٹری کی بحالی کے لیے 4 نکاتی پیکیج کا اعلان
image by face book

وفاقی بجٹ 19-2018 میں فلم انڈسٹری کی بحالی کے لیے 4 نکاتی پیکیج کا اعلان کیا گیا ہے۔ 


وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کا بجٹ پیش کرتے ہوئے کہنا تھا کہ پاکستان کی فلم انڈسٹری جو کہ 60 کی دہائی میں دنیا کی تیسری بڑی انڈسٹری تھی، حکومت  اس کے لیے مالی پیکیج کا اعلان کر رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس پیکیج کا مقصد فلم انڈسٹری کی ترقی کے لیے سازگار ماحول، روزگار کے نئے مواقع پیدا کرنا اور پاکستانی کلچر کو فروغ دینا ہے جب کہ  اس پیکیج کی بنیادی خصوصیات یہ ہیں۔

مفتاح اسماعیل کا کہنا تھا کہ ڈرامہ، فلم سازی اور سینما کے آلات کی درآمد پر کسٹم ڈیوٹی کی شرح کم کرکے 3 فیصد اور سیلز ٹیکس کم کرکے 5 فیصد کیا جا رہا ہے جب کہ فلم اور ڈرامہ کے فروغ کے لیے فنڈ قائم کیا جا رہا ہے جس سے فلم انڈسٹری اور مستحق فنکاروں کو مالی امداد دی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ اس کے علاوہ فلم کے پروجیکٹس پر سرمایہ کاری کرنے والے افراد اور کمپنیوں کیلئے 5 سال تک انکم ٹیکس پر 50 فیصد چھوٹ دی جا رہی ہے اور پاکستان میں بننے والی غیر ملکی فلموں پر عائد انکم ٹیکس پر 50 فیصد چھوٹ دی جا رہی ہے۔

وفاقی وزیر خزانہ نے بتایا کہ فلم پالیسی کی مزید تفصیلات وزیر اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب آئندہ چند روز میں پیش کریں گی۔