سندھ کے شادی ہالوں کیلئے نئے ضابطے متعارف کرانے کا فیصلہ

سندھ کے شادی ہالوں کیلئے نئے ضابطے متعارف کرانے کا فیصلہ

کراچی: سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی نے شادی ہالوں کے لیے نئے ضابطے متعارف کرانے کا فیصلہ کیا ہے جس کے تحت رفاہی پلاٹوں پر قائم تمام شادی ہال چھ ماہ میں مسمار کر دیئے جائیں گے۔ رہائشی پلاٹوں پر بنے ہوئے تمام شادی ہالوں کو فیس دے کر کمرشل ڈکلیئر کرانا ہو گا اس کے لیے شادی ہال کارقبہ بھی دو ہزار گز ہونا ضروری ہے جبکہ اس کے سامنے کم سے کم ڈیڑھ سوفٹ کی سڑک کا ہونا بھی ضروری ہے۔


ایس بی سی اے نے ان شرائط پر پورا نہ اترنے والے شادی ہال مالکان سے کہا ہے کہ وہ ازخود اپنے شادی ہالوں کو مسمار کر دیں ورنہ چھ ماہ بعد ایس بی سی اے ازخود یہ کام کرے گی۔ رہائشی پلاٹوں پر موجود شادی ہالز کو ریگولرائز کرانے والے مالکان سے کہا گیا ہے کہ وہ اپنی دستاویزات تصدیق کیلئے جمع کرائیں تاکہ انہیں این او سی جاری ہو سکے۔

اس سلسلے میں شہریوں کو مشورہ دیا گیا ہے کہ وہ بکنگ سے پہلے شادی ہالز مالکان سے اجازت نامے طلب کریں تاکہ مستقبل کی پریشانی سے بچا جا سکے۔ دوسری جانب میرج ہال ایسوسی ایشن کے ذرائع کے مطابق شہر میں 650 سے 700 شادی ہالز ہیں۔ ان میں پچاس فیصد چھوٹے یعنی نئے معیار پر پورے نہیں اترتے۔

اس لئے ایسوسی ایشن ایس بی سی اے سے متفق نہیں اور شادی ہالز کیخلاف کی جانے والی کسی بھی کارروائی کی مخالفت کریگی۔ انکے مطابق ان قوانین کا اطلاق نئے شادی ہالوں پر ہونا چاہیے نہ کہ پہلے سے موجود شادی ہالوں پر ان قوانین کا اطلاق کیا جائے۔ ذرائع کے مطابق اس وقت شہر میں کم وب یش دو سو کے قریب شادی ہال چائنا کٹنگ زمینوں پر بنے ہوئے ہیں۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں