حکومتی بے حسی، مصری فٹ بالر پھل بیچنے پر مجبور

حکومتی بے حسی، مصری فٹ بالر پھل بیچنے پر مجبور

قاہرہ: قومی ہیروز کے حوالے سے معاشرتی اور حکومتی بے حسی کے نمونے جا بجا پھیلے ہوئے ہیں۔ اس کی تازہ مثال مصر میں دیکھی گئی جہاں فٹ بال کے ایک سابق کھلاڑی اور ہیرو معاشرتی اور حکومتی بے حسی کے نتیجے میں بے روزگار ہے اور آج کل پیٹ پالنے کے لیے سڑک پر پھل فروخت کرنے پر مجبور ہے۔


عرب ٹی وی کے مطابق مصر کے فٹ بال طارق الجزار کو حال ہی میں الجیزہ کے گراؤنڈ میں پھلوں کی ٹوکری اٹھائے دیکھا گیا جہاں وہ معاشرتی بے حسی کی زندہ تصویر بنے پھل فروخت کر رہے تھے۔

خیال رہے کہ طارق الجزار نے 2012ء میں اٹلی میں ہونے والے گونگے بہرے کھلاڑیوں کے بین الاقوامی فٹ بال کپ میں حصہ لیا اور انہیں مصر کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا تھا۔ طارق کی پھل فروخت کرتے تصویر کو دیکھتے ہی لوگوں نے انہیں پہچان لیا۔

ان کی موجودہ حالت پر شہریوں کو بہت دکھ پہنچا ہے اور سوشل میڈیا پر ان کی حمایت میں مہم چلائی جا رہی ہے۔ سماجی کارکنان اور فٹ بال شائقین نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ طارق کا وظیفہ مقرر کرنے کے ساتھ ساتھ انہیں معقول روزگار فراہم کرے۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں