حسین حقانی وطن واپس آ کر میمو گیٹ کا سامنا کریں، چیف جسٹس کے ریمارکس

حسین حقانی وطن واپس آ کر میمو گیٹ کا سامنا کریں، چیف جسٹس کے ریمارکس

اسلام آباد: سپریم کورٹ میں اوورسیز پاکستانیوں کو ووٹ کا حق دینے سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی اور اس سلسلے میں چیئرمین نادرا عدالت میں پیش ہوئے۔ چیئرمین نادرا نے عدالت کو بتایا کہ الیکشن کمیشن کے ساتھ اوورسیز پاکستانیوں کی ووٹنگ کا معاملہ زیرغور ہے، اپریل کے اوائل تک سافٹ ویئر تیار کر لیں گے اور تجرباتی بنیادوں پر فرضی الیکشن میں اس سہولت کا تجربہ کیا جا سکتا ہے۔


دوران سماعت چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ چیئرمین نادرا نے بڑی اچھی خوشخبری دی ہے، اصل مقصد تارکین وطن کو ووٹ کی سہولت فراہم کرنا ہے، اوورسیز پاکستانی اس سہولت میں مالی حصہ ڈالنے کے لیے تیار ہیں۔ اس موقع پر چیف جسٹس نے کہا کہ ایک ایسے پاکستانی بھی ہیں جو عدالت سے وعدہ کرکے واپس نہیں آئے وہ کدھر ہیں، حسین حقانی کدھر ہیں،کیا انہیں بھی ووٹ ڈالنےکی سہولت ملے گی،کیوں نہ حسین حقانی کو نوٹس دےکر بلالیں۔

چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس میں کہا کہ حسین حقانی وطن واپس آ کر میمو گیٹ کا سامنا کریں۔ یاد رہے کہ پیپلزپارٹی کے گزشتہ دورِ حکومت میں اس وقت امریکا میں پاکستانی سفیر حسین حقانی کا ایک مبینہ خط سامنے آیا تھا جس کے بعد حکومت نے حسین حقانی سے استعفیٰ لیا تھا جب کہ حسین حقانی تب سے بیرون ملک مقیم ہیں۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں