مہاجرین کیلئے جرمنی میں نئی ٹیکنالوجی متعارف

برلن: جرمن حکام نے کہاہے کہ نئی ٹیکنالوجی کی وجہ سے رجسٹریشن کے عمل میں ماضی کی غلطیاں دہرائے جانے کے امکانات کم ہو جائیں گے۔ ٹیکنالوجی زبان کے انداز کا تجزیہ کرنے کی اہل ہے، لوگوں کے اصل ملک اور علاقے کا تعین ممکن ہو سکے۔

مہاجرین کیلئے جرمنی میں نئی ٹیکنالوجی متعارف

برلن: جرمن حکام نے کہاہے کہ نئی ٹیکنالوجی کی وجہ سے رجسٹریشن کے عمل میں ماضی کی غلطیاں دہرائے جانے کے امکانات کم ہو جائیں گے۔ ٹیکنالوجی زبان کے انداز کا تجزیہ کرنے کی اہل ہے، لوگوں کے اصل ملک اور علاقے کا تعین ممکن ہو سکے۔


میڈیارپورٹس کے مطابق فیڈرل آفس فار مائیگریشن اینڈ ریفیوجیز کا کہنا تھا کہ اس نظام کی مدد سے رجسٹریشن کے عمل میں بہتری پیدا ہو گی۔یہ ٹیکنالوجی زبان کے انداز کا تجزیہ کرنے کی اہل ہے جس سے لوگوں کے اصل ملک اور علاقے کا تعین ممکن ہو سکے۔حکام کا دعویٰ ہے کہ یہ اپنی نوعیت کی جدید ٹیکنالوجی ہے جبکہ اسی طرح ایک ایسا نیا سافٹ ویئر بھی متعارف کرایا گیا ہے جو پناہ کے متلاشی افراد کی بائیو میٹرک تصاویر لے گا۔فیڈرل آفس فار مائیگریشن اینڈ ریفیوجیز نے بتایا کہ جرمن صوبے سیکسنی کے بامبرگ سینٹر میں اس نئے نظام کا کامیاب ٹیسٹ کیا گیا ہے اور اس نظام کو جلد ہی ملک بھر میں بھی متعارف کرا دیا جائے گا۔