پاکستان نے مذہبی آزادی سے متعلق امریکی رپورٹ مسترد کر دی

پاکستان نے مذہبی آزادی سے متعلق امریکی رپورٹ مسترد کر دی
حقائق کے منافی ہے اور اندرونی معاملات پر مفروضوں پر مبنی رپورٹ کی حمایت نہیں کی جا سکتی، دفتر خارجہ۔۔۔۔۔۔۔۔فوٹو/ بشکریہ ریڈیو پاکستان

اسلام آباد: پاکستان نے مذہبی آزادی سے متعلق امریکا کی رپورٹ مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ رپورٹ کا پاکستان سے متعلق حصہ جانب دارانہ اور حقائق کے منافی ہے۔


پاکستان نے مذہبی آزادی سے متعلق امریکی رپورٹ کو مسترد کردیا اور کہا ہے کہ رپورٹ کا پاکستان سے متعلق حصہ جانب دارانہ اور حقائق کے منافی ہے اور اندرونی معاملات پر مفروضوں پر مبنی رپورٹ کی حمایت نہیں کی جا سکتی۔

دفتر خارجہ کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان ایک کثیر المذہبی اور کثیر الثقافتی ملک ہے جس میں تمام عقائد کے لوگوں کے حقوق کو آئینی تحفظ حاصل ہے پاکستان انسانی حقوق کے جامع نیشنل ایکشن پلان پر عمل کر رہا ہے۔

پاکستان نے کہا ہے کہ امریکی رپورٹ میں بھارت میں اقلیتوں خصوصاً مسلمانوں کے ساتھ ہونے والے سلوک کو نظر انداز کیا گیا اور جموں و کشمیر میں بھارتی قبضے کے پہلو کو بھی نظر انداز کیا گیا۔ پاکستان عدم برداشت کے خاتمے کی کوششوں میں عالمی برادری کا ساتھ دیتا رہے گا۔ پاکستان مغربی حکومتوں اور امریکا میں اسلامو فوبیا کے خلاف آواز اٹھا چکا ہے۔