تیل کی سعودی تنصیبات پر حملے عراق سے کئے گئے،امریکی اخبار

تیل کی سعودی تنصیبات پر حملے عراق سے کئے گئے،امریکی اخبار

واشنگٹن :موقر امریکی اخبارنے دعویٰ کیا ہے کہ امریکی حکام تحقیقات کے بعد اس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ امسال مئی میں سعودی عرب میں تیل پائپ لائن پر حملوں میں عراق کی سرزمین استعمال کی گئی تھی۔


ادھر عراقی حکومت نے اس حوالے سے امریکا سے مزید معلومات فراہم کرنے کا مطالبہ کیا ہے،امریکی اخبار کے مطابق امریکی حکام نے بتایاکہ عراق سے اڑائے گئے ڈرون طیاروں کے ذریعے تیل کی صنعت کو تباہ کرنے کی کوشش کی گئی۔

دوسری طرف عراقی حکومت نے اس حوالے سے امریکا سے مزید معلومات فراہم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔اخبار نے باخبر عہدیداروں کے حوالے سے بتایا کہ مئی میں سعودی عرب کی تیل پائپ لائن پر حملوں کے لیے جنوبی عراق سے ڈرون طیارے بھیجے گئے۔ عراق سے کی گئی کارروائی سے اشارہ ملتا ہے کہ سعودی تیل پائپ لائن پر حملہ ایرانی حمایت یافتہ ملیشیاﺅں نے کیا۔

خیال رہے کہ مئی میں سعودی عرب کی تیل پائپ لائن پر ڈرون طیاروں کی مدد سے کیے گئے حملوں کے نتیجے میں دو دن تک تیل کی سپلائی متاثر رہی جس کے بعد سپلائی بحال کر دی گئی تھی۔یہ حملہ سعودی عرب کے مشرقی علاقے میں ینبع بندرگاہ کے قریب شرقا غربا بچھائی گئی پائپ لائن پر کیا گیا۔ اس تیل پائپ لائن سے یومیہ 50 لاکھ بیرل تیل منتقل کیا جاتا ہے۔