مکی آرتھر نے آسٹریلوی کھلاڑیوں کو ”غیر مہذب اور مغرور “ قرار دے دیا

مکی آرتھر نے آسٹریلوی کھلاڑیوں کو ”غیر مہذب اور مغرور “ قرار دے دیا

لاہور: قومی ٹیم کے ہیڈ کوچ اور آسٹریلیا کے سابق کوچ مکی آرتھر نے آسٹریلوی کھلاڑیوں کو غیر مہذب اور مغرور قرار دے دیتے ہوئے کھلاڑیوں اور کرکٹ آسٹریلیا کو بال ٹیمپرنگ کے کلچر کو ختم نہ کرنے کا ذمہ دار قرار دے دیا۔


غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق مکی آرتھر کا کہنا تھا کہ جنوبی افریقہ میں ٹیسٹ میچ کے دوران جو بال ٹیمپرنگ کا واقعہ سامنے آیا وہ کئی سالوں سے جاری اس عمل کے مرتکب افراد کو سزا نہ دینے کا نتیجہ ہے۔کھلاڑیوں اور کھیلوں سے متعلق افراد کے اظہارِ خیال کے حوالے سے موجود ایک ویب سائٹ پر انہوں نے لکھا کہ نسل در نسل تبدیلی کے باوجود کرکٹ آسٹریلیا اور اس کی قومی ٹیم نے اس کلچر کو ختم کرنے کے لیے سنجیدگی سے کام نہیں لیا۔

نہوں نے کہا کہ انہیں گزشتہ چند سالوں کے دوران آسٹریلین کرکٹ ٹیم کو دیکھ کر بہت مایوسی ہوئی جہاں ان کا رویہ بہت غیر مہذب اور مغرور رہا ہے۔مکی آرتھر کا کہنا تھا کہ اپنے کام سے متعلق آسٹریلین کھلاڑیوں کا رویہ بھی ٹھیک نہیں رہا، جو ایک اچھی چیز نہیں ہے۔انہوں نے بتایا کہ جب آسٹریلین ٹیم کے کوچ تھے اس وقت انہوں نے کھلاڑیوں کو خود کو ایک قانون کی حیثیت سے پایا، جبکہ کسی بھی طرح کے مسائل ٹیم کے اندر ہی حل کر لیے جاتے تھے۔

خیال رہے کہ کرکٹ آسٹریلیا نے بال ٹیمپرنگ معاملے پر سابق کپتان اسٹیو اسمتھ اور نائب کپتان ڈیوڈ وارنر پر ایک ایک سال کی پابندی جبکہ کیمرون بینکرافٹ پر 9 ماہ کی پابندی عائد کردی۔