کورونا ویکسئن کی ذخیرہ اندوزی پر اقوام متحدہ برس پڑی

کورونا ویکسئن کی ذخیرہ اندوزی پر اقوام متحدہ برس پڑی
کیپشن: کورونا ویکسئن کی ذخیرہ اندوزی پر اقوام متحدہ برس پڑی
سورس: file photo

نیویارک ،امیر ملکوں کی طرف سے کورونا وائرس کی ویکسئن ذخیرہ کرنے پر اقوام متحدہ برہم ،سیکرٹری جنرل کا کہنا ہے کہ اس ذخیرہ اندوزی کی کوئی منطق ہی نہیں ہے ۔ 

تفصیلات کے مطابق  دنیا کے امیر ممالک نے کورونا وائرس کی ویکسئن ذخیرہ کرنا شروع کردی ہے جس پر اقوام متحد ہ کڑی تنقید کی ہے اور اس بات پر افسوس کا اظہار کیا ہے ۔  

عالمی میڈیا رپورٹس کے مطابق  اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوتریس نے کہا ہے کہ چند امیر ممالک کی جانب سے کورونا  ویکسین ذخیرہ کرنے کی کوئی منطق نہیں ہے۔

ایک ٹی وی انٹرویو میں ان کا کہنا تھا کہ مجھے دنیا میں کورونا ویکسین کی غیر منصفانہ تقسیم پر شدید تحفظات ہیں، ہر ایک کا فائدہ اسی میں ہے کہ ہر جگہ ہر کسی کو ویکسین لگے، وبا کے خاتمے کا انحصار ہی اسی پر ہے کہ پوری دنیا کی آبادی تک جلد یہ ویکسین پہنچے۔

ان کا کہنا تھا امیر ممالک ’اپنے فائدے‘ کے لیے ویکسین کی ذخیرہ اندوزی میں ملوث ہیں، میں کہتا ہوں ویکسین کو ذخیرہ مت کریں، اس کی کوئی منطق نہیں۔

انتونیو گوتریس نے ویکسین ذخیرہ کرنے والے ترقی یافتہ ممالک سے اپیل کی کہ انھوں نے جو ویکسینز خریدی ہیں، وہ دیگر ممالک کو بھی فراہم کر دیں، کیوں کہ یہ ان کی ضرورت سے زیادہ ہے۔

افسوس کا اظہار کرتے ہوئے سیکریٹری جنرل نے کہا ویکسینز کی غریب ممالک تک فراہمی کے کوویکس پروگرام کو مشکلات کا سامنا ہے کیوں کہ بہت زیادہ ذخیرہ اندوزی کی جا رہی ہے۔