این سی او سی کا یو اے ای سے پاکستان پہنچنے والے مسافروں کا دوبارہ کورونا ٹیسٹ کرنے کا فیصلہ

این سی او سی کا یو اے ای سے پاکستان پہنچنے والے مسافروں کا دوبارہ کورونا ٹیسٹ کرنے کا فیصلہ
سورس: فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر

اسلام آباد: نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی) نے متحدہ عرب امارات (یو اے ای) سے آنے والے مسافروں کے دوبارہ کورونا ٹیسٹ لینے اور مثبت رپورٹ کے حامل افراد کو قرنطینہ بھیجنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر کی زیر صدارت نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی) برائے انسداد کورونا کے اجلاس میں ملک بھر میں کورونا سے متعلق صورتحال پر اطمینان کا اظہار کرنے کیساتھ ساتھ سندھ میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد میں اضافے پر تشویش کا اظہار بھی کیا۔ 

اجلاس میں متحدہ عرب امارات (یو اے ای)سے آنے والے مسافروں کے صرف لیبارٹریز سے کرائے گئے ٹیسٹ قبول کرنے اور غیرمجاز لیبارٹریز کے ٹیسٹ والے مسافر کو بٹھانے پر ائیرلائن کو جرمانہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا جبکہ پاکستان پہنچنے پر مسافروں کا دوبارہ کورونا ٹیسٹ بھی ہو گا اور ٹیسٹ مثبت آنے پر متاثرہ شخص کو قرنطینہ میں بھیجا جائے گا۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ 50 سال سے زائد عمر کے کسی بھی سیاح کو ویکسی نیشن سرٹیفیکیٹ کے بغیر ہوٹل میں رہنے کی اجازت نہیں ہو گی جبکہ 30 سال یا اس سے زائد عمرکے سیاحوں کیلئے بھی ہوٹل میں قیام کیلئے ویکسی نیشن سرٹیفکیٹ لازمی قرار دیا گیا ہے، 30 سال یا اس سے زائد عمرکے سیاحوں کیلئے ہوٹل میں قیام کےلیے سرٹیفکیٹ کا اطلاق یکم جولائی سے ہو گا۔

این سی او سی نے کورونا کی کم شرح والے اضلاع میں پارک، واٹرپارک، سوئمنگ پولز کھولنے کی اجازت دیدی ہے تاہم پارکس میں مجموعی صلاحیت کے 50 فیصد تک لوگوں کو آنے اجازت ہو گی۔