پاکستان میں ایک سال کے دوران 30 ہزار مزید شہری ایڈز کا شکار

پاکستان میں ایک سال کے دوران 30 ہزار مزید شہری ایڈز کا شکار

اسلام آباد:ملک بھر میں ایک سال کے دوران ایچ آئی وی ایڈز میں 30ہزار مریضوں کااضافہ ہوا ہے جبکہ عالمی ادارہ صحت کے مطابق پاکستان میں تیس فیصد افراد ایچ آئی وی کا شکار ہیں۔پاکستان ایڈز کنٹرول کے مطابق ایچ آئی وی ایڈز کے مریضوں کااضافہ ہوا ہے۔


اسلام آباد میں قومی ادارہ برائے صحت کے زیر انتظام ایڈز کے عالمی دن کے موقع پر ایچ آئی وی اور ایڈز کے حوالے سے آگاہی اجاگر کرنے کے لئے ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے نیشنل ایڈز کنٹرول پروگرام کے مینیجرڈاکٹر بصیر اچکزئی کا کہنا تھا کہ 2017 کے اعدادو شمار کے مطابق پاکستان میں ایک اندازے کے مطابق ایک لاکھ 33 ہزار پ5 سو 29 افراد ایچ آئی وی کے ساتھ زندگی گزار رہے ہیں۔ انھوں نے بتایا کہ ایچ آئی وی اور ایڈز دو مختلف بیماریاں ہیں ایچ آئی وی کی بر وقت تشخیص اور علاج سے ایڈز جیسی مہلک بیماری سے بچا جا سکتا ہے۔

اس موقع پر عالمی ادارہ صحت کے پاکستان میں نمائندہ ڈاکٹر اسائی ارداکانی کا کہنا تھا کہ آج ہم جدید ٹیکنالوجی کے ذریعے ایڈز جیسی موذی مرض سے لڑ رہے ہیں اور ایک دن ہم کامیاب ہونگے۔ڈاکٹر اسائی ارداکانی کا مزید کہنا تھا کہ کہ بیماری کے خلاف لڑنا تمام انسانوں کا فرض ہے جسے سیاست کی نظر نہیں ہو نا چاہیئے۔