برطانوی سکول میں حجاب پر پابندی لگانے والی پرنسپل کو ہٹلر بنا دیا گیا

برطانوی سکول میں حجاب پر پابندی لگانے والی پرنسپل کو ہٹلر بنا دیا گیا

لندن:برطانیہ کے سرکاری سکول میں حجاب پر پابندی عائد کرنے والی پرنسپل کوسوشل میڈیا پر ہٹلر قرار دیدیا گیا۔


تفصیلات کے مطابق برطانیہ کے ایک سرکاری اسکول کی ہند نژاد پرنسپل نے کم عمر کی طالبات کے حجاب پہننے پر روک لگانے کی کوشش کی تھی۔ اس کے بعد انہیں سوشل میڈیا پر ہٹلر قرار دیا گیا ہے۔ مشرقی لندن کے نیوہوم واقع سینٹ اسٹیفنز اسکول کی پرنسپل نینا لال کو زبردست تنقید کے بعد اس ماہ کے آغاز میں اپنا فیصلہ تبدیل کرنا پڑا تھا۔ انہوں نے 8 سال سے کم عمر کی لڑکیوں کے حجاب پہنے پر پابندی لگا دی تھی۔

سوشل میڈیا پر نشر ہوئے ایک ویڈیو میں نینا کو جرمنی کے تاناشاہ ایڈولف ہٹلر اور اسکول کے آپریشن منڈل کے سابق صدر کو روسی ڈکٹیٹر ہٹلر اور انتظامیہ کے دیگر ارکان کو ہٹلر کے معاونین کے طور پر پیش کیا گیا ہے۔بعد ازاں والدین اور اسکول کے مینجمنٹ کے درمیان ہوئی ملاقات میں لیبر پارٹی کے مقامی ایم پی اسٹیفن ٹمس نے بھی شرکت کی۔ نینا کو اپنے فعل پر معافی مانگنے کے لئے کہا گیا۔