پانامہ معاملےپر پی ٹی آئی نے ہم سے مشاورت کیوں نہیں کی ؟قومی وطن پارٹی صوبائی حکومت سے الگ ہو گئی

پشاور : تحریک انصاف کی صوبائی حکومت کو بڑا سیاسی جھٹکا ، قومی وطن پارٹی کے2صوبائی وزراءاور2معاونین خصوصی مستعفی ہو گئے ، مستعفی ہونیوالوں میں سینئروزیرسکندرشیرپاﺅاورانیسہ زیب طاہرخیلی شامل جبکہ معاون خصوصی کریم خان اورارشد خان نے بھی استعفادےدیا.

قومی وطن پارٹی کے سربراہ آفتاب شیرپاﺅ نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہاتحریک انصاف نے پانامامعاملے پر ہم سے کوئی مشاورت نہیں کی لیکن پھر قومی وطن پارٹی اپوزیشن کے ساتھ کھڑی رہی جبکہ معاہدے کے تحت پی ٹی آئی کو قومی معاملات پرمشاورت کرنی چاہئے تھی،آفتاب شیرپاﺅ کا کہنا تھا ہمارا موقف تھا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کاانتظارکیاجائے، کے پی حکومت سے یکطرفہ الگ کرناتحریری معاہدے کی خلاف ورزی ہے۔انہوں نے کہا آج سے پی ٹی آئی سے اتحاد ختم ہو گیا ،اتحاد ٹوٹتے رہتے ہیں کوئی بات نہیں عمران خان خود کو تنہا کر رہے ہیں، پی ٹی آئی سے معاہدے میں صوبے کے مسائل کا ذکر تھا، اس پر عمل نہیں ہوا،آفتاب شیرپاﺅ کا کہنا تھا کسی صورت جمہوریت کوڈی ریل ہونے نہیں دیں گے۔