حکومت سانحہ ماڈل ٹاؤن دہرانا نہیں چاہتی ،معاون خصوصی وزیراعظم

حکومت سانحہ ماڈل ٹاؤن دہرانا نہیں چاہتی ،معاون خصوصی وزیراعظم
screen shot

لاہور،وزیراعظم کے معاون خصوصی  ملک عامر ڈوگر نے کہا ہے کہ حکومت نہیں چاہتی کہ کوویڈ کی دوسری لہر کے خطرناک نتائج آئیں ۔ نیو نیوز کے پروگرام عائشہ احتشام کے ساتھ گفتگو میں انہوں نے کہا کہ  حکومت کا موقف  تھا کہ جلسہ ضرور کریں لیکن کورونا کے دوران مناسب نہیں ۔

ان کا کہنا تھا کہ  پی ڈی ایم  نے ضد میں جلسہ کیا ۔ حکومت نے ہتھیار نہیں پھینکے  ۔ تحریک انصاف کی  حکومت سانحہ ماڈل ٹاؤن نہیں دہرانا چاہتی  ۔ ہم تو یہ چاہتے ہیں کہ کورونا کی وجہ سے یہ وقت مناسب نہیں ہے ۔ ہم کورونا کی دوسری لہر سے نکل جائیں تو جتنے مرضی جلسے کریں ۔ ہم نے تو پہلے بھی جلسہ کرنے سے نہیں روکا تھا ۔ آج ہماری معاشی پالیسی کے نتائج آرہے ہیں ایکسپورٹ بڑھ رہی ہے اور مہنگائی بھی کم ہورہی ہے ۔ 

آج جنوبی پنجاب میں سول سیکرٹریٹ کا قیام وجو د میں آچکا ہے ۔انہوں نے تو صرف عوام کو لالی پاپ دیا لیکن ہم نے باقاعدہ عملی اقدامات کئے ہیں ۔ نوازشریف ملک کا پیسہ لوٹ کر بھگوڑے بن کر باہر بیٹھے ہوئے ہیں ۔ وہ جو کہتے تھے کہ آصف زرداری کو گھسیٹیں گے وہ سب اکٹھے ہوچکے ہیں ۔ یہ اپنی کرپشن بچانے کے لئے اکٹھے ہوئے ہیں ۔ 

پروگرام میں موجود پاکستان پیپلزپارٹی کے رہنما شرجیل انعام میمن کا کہنا ہے کہ حکومت کورونا سے لڑنے کے لئے تیار نہیں ہے ۔ حکومت کی ٹانگیں کانپ رہی ہیں ۔ پی ڈی ایم سے یہ لوگ ڈرے ہوئے ہیں ۔ اگر حکومت کورونا کے سلسلے میں سیریس ہوتی تو یہ اقدامات کرتے لیکن ایسا نہیں نظر آرہا ۔ حکومت کی منافقت اور دوغلاپن ہے  ۔ عمران خان تو شروع سے ہی کوویڈ کو فلو سمجھتے تھے ۔ بختاور بھٹو ذوالفقار علی بھٹو کی نواسی ہے جس نے اس ملک کے لئے اپنی جان بھی دے دی ۔ بھٹو خاندان جیسی کوئی سیاسی فیملی نہیں جس نے اس ملک میں جمہوریت کے جانیں دیں ۔