پیرس: تین ہیرے چوروں کو 15 سال تک قید کی سزا سنا دی گئی

پیرس: تین ہیرے چوروں کو 15 سال تک قید کی سزا سنا دی گئی

پیرس:فرانسیسی عدالت نے پیرس کی معروف جیولری برینڈز کی دکانوں سے جواہرات چوری کرنے والے تین افراد کو 15سال تک قید کی سزا سنائی ہے۔پہلی ڈکیتی سنہ 2013میں ہوئی تھی جب یہ جرائم پیشہ افراد لاکھوں یورو مالیت کے جواہرات ڈی بیئرز کی دکان سے لے اڑے تھے۔


اس کے ایک سال کے بعد ہی وہ معروف جیولری برینڈ کارٹیے کے ایک سٹور گئے جہاں ان کی کارروائی کا اختتام پولیس کے ساتھ مقابلے پر ہوا۔استغاثہ کا کہنا ہے کہ ان دونوں وارداتوں میں مماثلت کی وجہ سے تفتیش کاروں نے اس سے قبل کیے جانے والے جرائم میں بھی دونوں افراد کو سزا دی ہے۔

پیرس میں ایک عدالت نے ڈومنیکا ویلاکا کو ان دونوں جرائم کے ارتکاب پر 15سال قید کی سزا سنائی۔سنہ 2014کی ڈکیتی میں حصہ لینے والے 26سالہ اسماعیلہ فوفانہ اور ان کے کزن یوسف فوفانہ کو سات سات سال قید کی سزا سنائی گئی۔

عدالت کو بتایا گیا کہ کیسے یوسف فوفانہ اور ڈومنیکا ویلاکا نے پیرس کے مرکز میں واقع ڈی بیئرز کی دکان میں سنہ 2013میں ڈکیتی کی اور 30لاکھ 30ہزار پانڈ کی جیولری ساتھ لے کر چلتے بنے۔ اس کارروائی میں کوئی شخص زخمی نہیں ہوا تھا۔

تاہم نومبر سنہ 2014میں وہ کارٹیئر سٹور سے 80لاکھ یورو کے زیورات لے کر جا رہے تھے کہ پولیس نے ان پر فائرنگ کر دی جس کے بعد میں انھوں نے فرار ہونے کے لیے دکان پر موجود ایک ملازم کو مغوی بنا لیا۔بعد ازاں پولیس نے ان کا پیچھا کرتے ہوئے انھیں ہتھیار ڈالنے پر مجبور کر دیا۔