سہانا خان کو بدصورت اور چڑیل کہہ کر پکارا جانے لگا

سہانا خان کو بدصورت اور چڑیل کہہ کر پکارا جانے لگا

ممبئی:بالی ووڈ کنگ شاہ رخ خان کی بیٹی سہانا خان کو بدصورت اور چڑیل کہہ کر پکارا جانے لگا۔


بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق ایک طرف تو بھارت میں شاہ رخ خان کو قدر کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے تو دوسری طرف ان ہی کی بیٹی کو اس وقت اپنے رنگ کی وجہ سے طنز اور نفرت انگیزی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے جس کا اظہار کھلم کھلا سوہانا خان نے کیا ہے۔

سہانا خان نے  ان کے رنگ کو لیکر منفی باتیں کرنے والوں کے مسیجز کے سکرین شاٹس کو شیئر کیا اور کہا کہ’انہیں 12 سال کی عمر سے ہی بدصورت کہا جاتا ہے اور یہ افسوسناک ہے ، کیوں کہ ہندوستانی پہلے سے براؤن ہوتے تھے  اور اپنے لوگوں سے نفرت کرنے کا مطلب صرف یہ ہوتا ہے کہ آپ دردناک طور پر غیر محفوظ ہیں‘۔

سہانا خان کو کئے جانے والے نفرت انگیز پیغامات میں انہیں بدصورت اور سانولی ہونے پر طعنے دیئے گئے جس پر سہانا خان رنگ کو لیکر نفرت کرنے بارے مضبوط پیغام دیتے ہوئےکہا کہ وہ اپنے جسم اوراپنی رنگت سے پوری طرح خوش ہیں۔

View this post on Instagram

There's a lot going on right now and this is one of the issues we need to fix!! this isn't just about me, it's about every young girl/boy who has grown up feeling inferior for absolutely no reason. Here are just a few of the comments made about my appearance. I've been told I'm ugly because of my skin tone, by full grown men and women, since I was 12 years old. Other than the fact that these are actual adults, what's sad is that we are all indian, which automatically makes us brown - yes we come in different shades but no matter how much you try to distance yourself from the melanin, you just can't. Hating on your own people just means that you are painfully insecure. I'm sorry if social media, Indian matchmaking or even your own families have convinced you, that if you're not 5"7 and fair you're not beautiful. I hope it helps to know that I'm 5"3 and brown and I am extremely happy about it and you should be too. #endcolourism

A post shared by Suhana Khan (@suhanakhan2) on

سماجی رابطے کی ویب سائٹ انسٹا گرام پر سٹوری شیئر کرتے ہوئے سہانا خان نے ان کے رنگ کو لیکر منفی باتیں کرنے والوں کو جواب دیتے ہوئے کہا کہ ’’ابھی بہت کچھ چل رہا ہے اور یہ ان مسائل میں سے ایک ہے جس کی ہمیں اصلاح کرنے کی ضرورت ہے !! یہ صرف میرے بارے میں نہیں ہے ، یہ ہر نوجوان لڑکی / لڑکے کے بارے میں ہے  جس کو بچپن سے لیکر آج تک بغیر کسی وجہ کے احساس کمتری کا شکار کیا جاتا ہے۔ یہاں میری شکل کے بارے میں لوگوں کی جانب سے کئے گئے کمنٹس ہیں۔‘‘

سہانا خان نے مزید لکھا کہ ’’مجھے ان کمنٹس اور میسجز کے ذریعے اس بات کا طعنہ دیا گیا ہے کہ میں اپنے ہم عمروں کے مقابلے میں اپنی رنگت کی وجہ سے بدصورت ہوں ،چونکہ میں 12 سال کا تھا۔

 اس حقیقت کے علاوہ کہ یہ اصل بالغ ہیں ، افسوس کی بات یہ ہے کہ ہم سب ہندوستانی ہیں ، جو خود بخود ہمیں بھورے بنادیتے ہیں - ہاں ہم مختلف رنگوں میں آتے ہیں لیکن اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا ہے کہ آپ میلانین سے کتنا دور ہوجائیں ، آپ صرف یہ نہیں کرسکتے . اپنے ہی لوگوں سے نفرت کرنے کا صرف یہ مطلب ہے کہ آپ تکلیف دہ طور پر غیر محفوظ ہیں۔

 مجھے افسوس ہے کہ اگر سوشل میڈیا  ہندوستانی میچ سازی یا یہاں تک کہ آپ کے اپنے کنبے نے بھی آپ کو باور کرایا ہے کہ اگر آپ کا قد پانچ فٹ 7انچ نہیں ہے تو آپ خوبصورت نہیں ہیں۔میں آپ کو بتاتی چلوں کہ میرا قد 5فٹ 3انچ ہے اور میرا رنگ برائون ہے اور میں اس سے بہت خوش ہوں۔آخر میں سہانا خان نے ہیش ٹیگ #endcolourism کا بھی استعمال کیا۔