پاکستان کی خارجہ پالیسی کو بہت سے چیلنجز کا سامنا ہے، دفتر خارجہ

پاکستان کی خارجہ پالیسی کو بہت سے چیلنجز کا سامنا ہے، دفتر خارجہ

اسلام آباد: دفتر خارجہ میں ہفتہ وار بریفنگ کے دوران ترجمان نفیس ذکریا نے افغانستان میں دہشت گردی کے واقعات کی مذمت کی جب کہ ٹیکساس میں طوفان سے ہونے والی تباہ کاریوں پر بھی افسوس کا اظہار کیا۔ ترجمان کا کہنا تھا کہ ہیوسٹن میں پاکستانی قونصل جنرل ریسکیو اور ریلیف سرگرمیوں میں مصروف ہیں جب کہ فخر ہے پاکستانی کمیونٹی ریسکیو اور ریلیف کے کاموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لے رہی ہے۔


نفیس ذکریا نے کہا کہ پاکستان اور امریکا کے درمیان فی الحال کوئی اعلیٰ سطح کا رابطہ نہیں ہوا اور پاکستان کی خارجہ پالیسی کو بہت سے چیلنجز کا سامنا ہے۔ ترجمان نے امریکی جنرل نکلسن کے پاکستان میں دہشت گردوں کی پناہ گاہوں سے متعلق بیان کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یہ بیان غیر ضروری اور ناقابل قبول ہے۔

ترجمان نے کشمیر کی صورتحال پر بات کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا سلسلہ جاری ہے جب کہ حریت رہنماؤں کو حراست میں لیے جانے پر تشویش ہے۔ بھارت میں سابق پاکستانی ہائی کمشنر عبدالباسط کے خط سے متعلق نفیس ذکریا نے کہا کہ موجودہ حالات میں عبدالباسط کے مبینہ خط پر کوئی بحث نہیں کرنی چاہیے اور چیلنجز سے نمٹنے کے لیے ہمیں ایسی باتوں سے گریز کرنا ہو گا۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں