خیبرپختونخواہ میں سیلاب سے متاثرہ 17 اضلاع میں نافذ ایمرجنسی میں توسیع

خیبرپختونخواہ میں سیلاب سے متاثرہ 17 اضلاع میں نافذ ایمرجنسی میں توسیع

پشاور: صوبہ خیبرپختونخوا کے17 اضلاع میں سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں نافذ کی گئی ایمرجنسی میں 30 ستمبر تک توسیع کر دی گئی ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق خیبرپختونخواہ کے مختلف علاقوں میں سیلاب کی تباہ کاریاں جاری ہیں اور چارسدہ کے مقام پر دریائے جیندی میں سیلاب متاثرین کے 2 بچے ڈوب گئے جن کی لاشیں نکال لی گئیں۔

خیبرپختونخواہ میں حالیہ سیلابی صورتحال کے حوالے سے پشاور میں کنٹرول روم بھی قائم کیا جا چکا ہے اور اس کے ذریعے صوبے میں سیلاب سے پیدا ہونے والی صورتحال کا مسلسل جائزہ لیا جا رہا ہے۔ 

اس حوالے سے ڈپٹی کمشنر پشاور شفیع اللہ خان کا کہنا تھا کہ تمام متعلقہ محکمے کسی بھی ایمرجنسی صورتحال سے نمٹنے کیلئے مکمل تیار ہیں، کنٹرول روم میں تمام متعلقہ محکموں کے نمائندے ڈیوٹیاں سرانجام دیں گے۔ 

دوسری جانب بلوچستان میں ہیلی کاپٹر کے ذریعے امدادی سامان پہنچانے کاعمل جاری ہے اور نصیرآباد کے متاثرہ علاقے بابا کوٹ میں خشک راشن، خیمے، ادویات اورپینے کاپانی پہنچا دیاگیا ہے۔ 

ذرائع کا کہنا ہے کہ متاثرہ علاقے میں ہیلی پیڈ کی سہولت نہ ہونے کے باعث ہیلی کاپٹر کو سڑک پر اتارا گیا اور متاثرین میں خشک راشن، خیمے، ادویات اور پینے کا پانی پہنچایا گیا۔ 

ترجمان این ایچ اے کے مطابق سیلاب سے کوئٹہ تفتان ،کوئٹہ کراچی، کوئٹہ سبی شاہراہ متاثر ہوئی جنہیں کم وقت میں بحال کر دیا جبکہ کہا جارہا ہے کہ کوئٹہ سبی شاہراہ بھی جلد ٹریفک کیلئے کھول دی جائے گی۔ 

مصنف کے بارے میں