عمران خان کے سابق پرنسپل سیکرٹری اعظم خان کا نام سٹاپ لسٹ سے نکالنے کا حکم 

عمران خان کے سابق پرنسپل سیکرٹری اعظم خان کا نام سٹاپ لسٹ سے نکالنے کا حکم 

اسلام آباد: اسلام آباد ہائیکورٹ نے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان کے سابق پرنسپل سیکرٹری اعظم خان کا نام سٹاپ لسٹ سے نکالنے کا حکم دیدیا ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے اعظم خان کانام سٹاپ لسٹ میں شامل کرنے کیخلاف درخواست پر سماعت کی۔ 

جسٹس اطہر من اللہ نے اسسٹنٹ اٹارنی جنرل سے استفسار کیا کہ کس قانون کے تحت اعظم خان کا نام سٹاپ لسٹ میں شامل کیا گیا؟ جسٹیفائی کریں کہ سٹاپ لسٹ کیا چیز ہے؟

درخواست گزارکے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ اعظم خان کو کہا گیا کہ ریکارڈ کے ساتھ پیش ہوں، وہ اب پرنسپل سیکرٹری کے عہدے پرہی نہیں تو کیسے ریکارڈ پیش کریں۔

اس پر عدالت نے کہا کہ اس کیس میں ریکارڈ تو قومی احتساب بیورو (نیب) کے پاس ہو گا، پی این آئی ایل کا کوئی لیگل سٹیٹس نہیں، ایسی کوئی وجہ نہیں کہ نام پی این آئی ایل میں شامل کیا جائے۔

عدالت نے کہا کہ اعظم خان کو اگر پارلیمنٹ میں طلب کیا گیا تھا تو انہیں جانا چاہیے تھا، اگر پبلک اکاؤنٹس کمیٹی (پی اے سی) انہیں 8 ستمبر سے پہلے بلاتی ہے تو وہ پیش ہو جائیں۔

جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ اعظم خان کی آزادی پر کوئی قدغن نہیں لگائی جا سکتی اور بعد ازاں عدالت نے اعظم خان کا نام سٹاپ لسٹ سے نکالنے اور انہیں پبلک اکاؤنٹس کمیٹی میں پیش ہونے کا حکم دیا۔

مصنف کے بارے میں