ڈونلڈ ٹرمپ نے حکم نہ ماننے پر اٹارنی جنرل کو معطل کر دیا

 ڈونلڈ ٹرمپ نے حکم نہ ماننے پر اٹارنی جنرل کو معطل کر دیا

واشنگٹن:  قائم مقام اٹارنی جنرل سیلی ییٹس کو نو منتخب امریکی صدر کی حکم عدولی مہنگی پڑ گئی۔صدارتی حکم نامہ تسلیم کرنے سے انکار کرنے پر فوراََ معطل کر دیا ۔قائم مقام اٹارنی جنرل پر الزام تھا کہ انہوں نے نہ صرف صدارتی حکم نامہ ماننے سے انکار کیا بلکہ سرکاری وکلاء کو بھی ہدایت دی تھی کہ وہ پناہ گزینوں اور امیگریشن سے متعلق حکومتی مقدموں کی پیروی نہ کریں۔


ٹرمپ کی نئی امیگریشن پالیسی اور سات مسلم ممالک سے آنے والے پناہ گزینوں کے امریکہ میں داخلے پر پابندی کے حکم نامے کے خلاف سیلی ییٹس گزشتہ چند دنوں مسلسل عوامی بیانات دے رہی تھیں اور ان کا کہنا تھا کہ ٹرمپ کا یہ اقدام غیرقانونی اور غیر آئینی ہے جس پر کسی صورت عمل درآمد نہیں ہونا چاہئے۔

اس خبر کو بھی پڑھیں: ڈونلڈ ٹرمپ کے نئے صدارتی حکم نامے قائم مقام اٹارنی جنرل کے طور پر ییٹس کا تقرر سابق امریکی صدر براک اوباما نے وائٹ ہاؤس میں اپنے آخری دنوں میں کیا تھا جبکہ اس سے پہلے بھی وہ ڈیموکریٹ حکومتوں میں ڈپٹی اٹارنی جنرل اور اٹارنی جنرل کے عہدے پر فائز رہ چکی تھیں۔