حج پالیسی منظور، حاجیوں کو سبسڈی نہ دینے کا فیصلہ

حج پالیسی منظور، حاجیوں کو سبسڈی نہ دینے کا فیصلہ
حاجیوں کو دی جانے والی سہولیات پر کسی قسم کا کوئی سمجھوتا نہیں کیا جائے گا، وزیراعظم۔۔۔۔۔۔فائل فوٹو

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت اجلاس میں وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں سال 2019 کی حج پالیسی پیش کی گئی۔ کابینہ کا بتایا گیا کہ حج درخواستیں 20 فروری سے وصول کی جائیں گی۔


                       

اس سے قبل اطلاعات تھیں کہ حکومت فی حاجی 45 ہزار روپے سبسڈی دے گی لیکن حکومت نے اس سال حاجیوں کو کسی قسم کی سبسڈی نہ دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

اجلاس کے دوران وزیراعظم نے کہا کہ وہ حج پراسیس کو خود مانیٹر کریں گے اور حاجیوں کو دی جانے والی سہولیات پر کسی قسم کا کوئی سمجھوتا نہیں کیا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق بریفنگ کے دوران بتایا گیا کہ رواں برس ایک لاکھ 84 ہزار 210 پاکستانی فریضہ حج ادا کریں گے جس میں سرکاری کوٹہ 60 فیصد اور نجی ٹورز آپریٹرز کا کوٹہ 40 رکھا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق اس سال 80 سال یا زائد عمر کے افراد اور مسلسل تین سال سے ناکام رہنے والوں کو بغیر قرعہ اندازی حج پر بھجوایا جائے گا۔

اجلاس میں بتایا گیا کہ حج کے اخراجات دو زونز میں تقسیم کر دیئے گئے ہیں۔ شمالی زون کے حج اخراجات چار لاکھ 36 ہزار 975 روپے اور جنوبی زون کے حج اخراجات 4 لاکھ 27 ہزار 975 روپے ہوں گے۔