بلوچستان عوامی پارٹی نے تحریک انصاف کی غیر مشروط حمایت کا اعلان کر دیا

بلوچستان عوامی پارٹی نے تحریک انصاف کی غیر مشروط حمایت کا اعلان کر دیا

اسلام آباد :تحریک انصاف نے مرکز میں اکثریت حاصل کرنے کے بعد بلوچستان میں بھی مخلوط حکومت بنانے کی نوید سنا دی،  بلوچستان عوامی پارٹی نے تحریک انصاف کی مرکز میں غیر مشروط حمایت کا اعلان کر دیا ۔

 

بلوچستان عوامی پارٹی کے وفد نے پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کے ساتھ ملاقات میں انھیں وفاق کے ساتھ بھرپور انداز میں چلنے اور غیر مشروط حمایت کا یقین دلایا ہے۔ بلوچستان عوامی پارٹی (بی اے پی ) کا وفد جام کمال کی سربراہی میں بنی گالا پہنچا، جہاں ان کی پاکستان تحریکِ انصاف ( پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان سے ملاقات ہوئی۔

  

عمران خان کے ساتھ ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو میں جام کمال کا کہنا تھا کہ سینیٹ الیکشن میں بھی تحریکِ انصاف کے ساتھ تعاون کیا تھا، اب بھی وفاق میں ہمارے چاروں رکن قومی اسمبلی پی ٹی آئی کی حمایت کریں گے۔ ہم بنی گالا سے اچھا پیغام لے کر جا رہے ہیں، دونوں جماعتیں ایک دوسرے کی سپورٹ اور ملک کی ترقی کیلئے مل کر کام کریں گی۔

جہانگیر ترین نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بلوچستان کا چیف منسٹر جام کمال ہی ہونگے اور ہم اس کی بھرپوورتائید کرتے ہیں ،جام کمال کا اس موقع پر کہنا تھا کہ تحریک انصاف کے ساتھ بہتر انداز میں آگے بڑھ رہے ہیں اب بلوچستان میں تبدیلی ضرور آئیگی۔


جام کمال کی سربراہی میں بلوچستان عوامی پارٹی کے وفد میں زبیدہ جلال، خالد مگسی، احسان اللہ ریگی اور اسرار ترین شامل تھے۔ چاروں اراکیننے قومی اسمبلی کی نشستوں پر کامیابی حاصل کی ہے۔