'یمن میں آپریشن نہ کرتے تو پورے خطے میں بہت بڑا مسئلہ پیدا ہوتا'

'یمن میں آپریشن نہ کرتے تو پورے خطے میں بہت بڑا مسئلہ پیدا ہوتا'

نیو یارک: امریکی میڈیا کو انٹرویو دیتے ہوئے سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے کہا ہے کہ خطے میں نئی جنگ سے بچنے کے لیے عالمی برادری ایران پر دباؤ ڈالے اگر ایران کو محدود رکھنے کی کوششیں کامیاب نہ ہوئیں تو آئندہ 10، 15 سال میں اس کے ساتھ جنگ چھڑ جانے کا امکان ہے۔


ولی عہد اور وزیر دفاع شہزادہ محمد بن سلمان نے مزید کہا کہ ایران کو محدود رکھنے کے لیے اس پر پابندیاں عائد کرنا ضروری ہے۔ اخوان المسلمین دہشت گردوں کی پرورش کرنے والی جماعت ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں دہشت گردی اور انتہا پسندی سے نجات حاصل کرنی ہے اور یہ جماعت شدت پسندی کی تعلیم دیتی ہے جو بالآخر دہشت گردی کا باعث ہے۔

یمن کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے سعودی ولی عہد نے کہا کہ اگر ہم یمن میں آپریشن نہ کرتے تو پورے خطے کے لیے بہت بڑا مسئلہ پیدا ہوتا۔

ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ 2015ء میں جنگی مداخلت کا فیصلہ نہ کیا جاتا تو آج یمن دو حصوں میں تقسیم ہو چکا ہوتا جبکہ آدھے حصے پر حوثی باغیوں کا قبضہ ہوتا اور دوسرے حصے پر القاعدہ قابض ہوتی۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں