برطانیہ میں ایک ماہ کے مکمل لاک ڈائون کا فیصلہ

pm,global epidemic,Britain,Boris Johnson,lock down

لندن: برطانیہ میں عالمی وبا کی تباہ کاریاں مسلسل بڑھ رہی ہیں اور اب صرف سردیوں میں 85 ہزار برطانوی شہریوں کی اموات کے اندازہ پر مبنی رپورٹ جاری ہونے کے بعد برطانوی وزیر اعظم نے ملک بھر میں ایک ماہ کیلئے مکمل لاک ڈائون کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق برطانوی وزیر اعظم برطانیہ میں عالمی وبا کی مسلسل تباہ کاریوں کے بعد اب منصوبہ بندی کر رہے ہیں کہ پورے برطانیہ میں لاک ڈائون کر دیا جائے اور لوگوں کو گھروں میں بند کر د یا جائے۔ برطانوی وزیر اعظم کی طرف سے یہ اقدامات عالمی وبا کی پھیلتی ہوئی خطرناک صورتحال کے بعد کی گئی ہے جب برطانیہ کے ہسپتالوں میں اب عالمی وبا کے مزید مریض داخل کرنے کی جگہ ہی باقی نہیں رہی۔

اس لاک ڈائون کی جو ابتدائی تفصیلات برطانوی میڈیا کے ذریعے سامنے آئی ہیں ان کے مطابق تمام تعلیمی ادارے ٗ دفاتر  بند کئے  جا رہے ہیں صرف پیرا میڈیکل سٹاف ٗ ضروری دکانیں ( وہ بھی مخصوص اوقات میں) اس لاک ڈائون سے مبرا ہوں گے۔ برطانوی وزیر اعظم نے اپنے سنیئر وزرا رشی سناک ٗمائیکل گوو اور میٹ ہین کوک کے ساتھ ایک میٹنگ میں اس بات کا فیصلہ کیا ہے ۔ یہ لاک ڈائون کا ابتدائی دورانیہ ایک ماہ ہو گ

اس حوالے سے حکومتی وزرا کا کہنا ہے کہ ان کے پاس اس کے علاوہ اور کوئی حل نہیں رہ گیا کہ فوری طور پر ملک میں لاک ڈائون کر دیا جائے۔یہ فیصلہ برطانیہ کے سائنسی ایڈوائزری گروپ کی طرف سے جاری کی جانے والی ایک رپورٹ کے بعد کیا گیا ہےجس میں یہ خدشہ ظاہر کیا گیا تھا کہ ان سردیوں میں صرف برطانیہ میں عالمی وبا سے مزید 85 ہزار اموات ہو سکتی ہیں۔