چین اور امریکا کے درمیان تجارتی جنگ شدت اختیار کر گئی

چین اور امریکا کے درمیان تجارتی جنگ شدت اختیار کر گئی

بیجنگ: چین اور امریکا کے مابین تجارتی جنگ شدت اختیار کر گئی جب کہ امریکا کی طرف سے ٹیکس عائد کیے جانے کے بعد چین نے بھی جوابی اقدام کرتے ہوئے امریکی مصنوعات پر 50 فیصد اضافی ٹیکس عائد کر دیا جس سے امریکا کی 106اشیا متاثر ہوں گی۔

 

امریکا کی جانب سے محصولات میں اضافے کے جواب میں چین نے بھی امریکی مصنوعات پر ڈیوٹی بڑھا دی ہے۔ بیجنگ حکومت کے مطابق اس طرح امریکا سے درآمد کیا جانے والا سویابین، گاڑیاں، گائے کے گوشت کے علاوہ طیارہ سازی اور کیمیائی صنعت میں استعمال ہونیوالے سامان پر25 فیصد اضافی ٹیکس عائد کر دیا گیا ہے۔

 

مزید پڑھیں: روس، ترکی کو جدید ترین فضائی دفاعی نظام ایس 400 فراہم کرے گا

بتایا گیا ہے کہ اس طرح 4 شعبوں کی 106 امریکی مصنوعات متاثر ہوں گی۔ ابھی گزشتہ روز ہی واشنگٹن نے مزید 1300 چینی کمپنیوں پر اضافی محصولات عائد کیے تھے۔

امریکا میں تجارت کے نمائندہ ادارے USTR کے مطابق اس فہرست میں کیمیکل بنانے والوں سے لے کر الیکٹرونک آلات تیار کرنے والی چینی مصنوعات شامل ہیں۔ اس اقدام کی وجہ سے چینی درآمدات کو 50 ارب ڈالر تک کا نقصان پہنچ سکتا ہے۔

یہ خبر بھی پڑھیں: ٹرمپ کا میکسیکو کی سرحد پر فوج تعینات کرنے کا اعلان

یو ایس ٹی آر کے بقول اس دوران امریکی صارفین کے نقصان کو محدود رکھنے کی کوشش کی گئی ہے۔ ٹرمپ کے بقول وہ چین کے غیر منصفانہ تجارتی انداز کو روکنا چاہتے ہیں۔ بیجنگ نے ان امریکی اقدامات کا شدید جواب دینے کا اعلان کیا تھا۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں